بلوچستان میں فوجی آپریشن

بلوچستان پر قابض پاکستانی (پنجابی) فوج نے 1948 میں بزورِ طاقت قبضہ کرتے ہوئے اپنی طاقت کی بنا پر بلوچ قوم کو غلام بنائے رکھا ہے۔ اور تب سے لیکر موجودہ دن تک بلوچستان میں مختلف ادوار میں فوجی آپریشن کرتے ہوئے بلوچ قوم کی ان کے حقوق کے لیے اٹھنے والی آوازوں کو بزورِ طاقت دبایا گیا۔ موجودہ فوجی آپریشن ڈکٹیٹر جنرل پرویز مشرف کے دور میں شروع ہوا جس میں بلوچ قوم کے بزرگ رہنما نواب اکبر خان بگٹی کو بھی شہید کیا گیا، اور تب سے بلوچستان بھر میں بلوچوں، پاکستانی فوج، خفیہ اداروں اور مقامی ڈیتھ اسکواڈ کے درمیان آزاد بلوچستان کے قیام کو ممکن بنانے کے لیے جنگ جاری ہے۔آزاد بلوچستان کی اس تحریک میں اب تک ہزاروں بلوچوں کو شہید کیا جاچکا ہے۔