موصل میں عراقی فوج کی کاروائی میں داعش کے 25جنگجوہلاک

بغداد(ریپبلکن نیوز) عراق کی فیڈرل پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ شمالی شہر موصل میں داعش کے خلاف جاری فیصلہ کن آپریشن میں تازہ لڑائی کے دوران کم سے کم پچیس جنگجو ہلاک اور دسیوں زخمی ہوگئے ہیں۔ عرب ٹی وی کے مطابق عراقی پولیس کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ موصل کے بائیں کنارے کی کالونیوں میں داعش کو شکست کا سامنا ہے اور جنگجو اپنے ٹھکانے چھوڑ کر فرار ہو رہے ہیں۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ معرکہ موصل کے دوسرے مرحلے کے دوسرے دن مشرقی موصل کی کئی کالونیوں کو داعش سے چھڑایا گیا ہے۔ شہر کے جنوبی محاذ پر داعش کی پوزیشن تاحال مضبوط ہے اور جنگجو پوری قوت کے ساتھ مزاحمت کر رہے ہیں۔ جگہ جگہ بچھائی گئی بارودی سرنگیں عراقی فوج کی پیش قدمی کی راہ ایک بڑی رکاوٹ ہیں۔ خیال رہے کہ عراقی فوج اور پولیس نے اتحادی فوج کی معاونت سے یکم اکتوبر موصل میں داعش کے خلاف آپریشن شروع کیا تھا۔ دو روز پیشتر عراقی فوج نے موصل میں داعش کے خلاف کارروائی کا پہلا مرحلہ مکمل کرنے کیبعد دوسرے اور آخری مرحلے کا اعلان کیا ہے۔ دوسرے مرحلے میں عراقی فوج کے ہمراہ امریکی عسکری مشیران بھی موجود ہیں۔ عراقی حکومت نے موصل آپریشن کے لیے 5000 اہلکاروں کا اضافہ کیا ہے۔ فیڈرل پولیس کے اہلکاروں کی بڑی تعداد اس کے سوال ہے۔ عراقی فورسز کا کہنا ہے کہ انہوں نے تازہ لڑائی میں القدس اور الکرامہ کالونیوں کی طرف فاتحانہ پیش قدمی کی ہے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close