چھتر: سرکاری سکولوں میں تعلیم نہ ہونے کی وجہ سےبچوں میں نقل کا روجھان بڑھ رہا ہے

Student-copying-answer-PHOTO-PPI-640x480چھتر(ری پبلکن نیوز) ضلع نصیرآباد تحصیل چھتر سرکاری سکولوں میں تعلیم نہ ہونے کی وجہ سےبچوں میں نقل کا روجھان بڑھ رہا ہے محکمہ تعلیم کے آفسران اپنے دفتروں میں بیٹھ کر خانہ پوری کر رہے ہیں آنے والا نسل تعلیم یافتہ جاہل پیدا ہوں گے بچوں کو اپنے نام تک لکھنے نہیں آ رہا ہے صوبائی حکومت چھتر علاقہ میں تعلیمی تباہی کا نوٹس لے عوامی سماجی فلاحی حلقوں کا مطالبہ تفصیلات کے مطابق تحصیل چھتر کے علاقے۔میرحسن کنری ۔طاہر کوٹ شاہ پور قلندرانہ ۔مصری ۔نبی بخش کھوسہ ۔گوٹھ اسلم خان ۔گوٹھ شاہنواز خان ۔حمید آباد ۔کنڈی ۔موندر ۔پیروپل ۔سردار اللہ وریا شر ،گوٹھ سردار خان کھوسہ ۔گوٹھ امداد حسین کھوسہ ۔دیگر جہاں پر بھی سرکاری سکول ہائی مڈل پرائمری موجود ہیں تعلیم کا بیڑا غرق ہو چکا ہے کافی سکول بند پڑئے ہوئے ہیں اساتذہ سکول کا منہ دیکھنا بھی گوارہ نہیں کرتے ہیں تنخواہ والے دنوں جاکے بنک کا منہ دیکھتے ہیں یا پھر اے ٹی ایم کے ذریعے تنخوائیں وصول کر لیتے ہیں ناپڑھنا والے اساتذہ نے سود کا کاروبار کھول رکھا ہے اور نیا موٹر سائیکل لیکر ایک لاکھ تیس ہزار روپے کے حساب سے چھ ماہ کے وقت پر فروخت کر دیتے ہیں کئی اساتذہ ٹھکیداروں کے منشی اور وڈیروں کے منشی اور ملز کے منشی بنے ہوئے ہیں کچھ اساتذہ سکول جاتے ہیں وہ بھی ٹائم پاس کرنے کی غرض سے سارا دن گپ شب لگا کر بغیر بچوں کو پڑھائے واپس آ جاتے ہیں سرکاری سکولوں میں مزدور کاشتکاروں کے بچے تعلیم حاصل کرنے کی غرض سے جاتے ہیں لیکن تعلیم کے حالت اندازہ لگا یا جا سکتا ہے دوئم سوئم تیسری پانچویں چھٹی آٹھویں کے امتحانات میں بچوں کو پاس کرنے کے لئے وہی اساتذہ خود بچوں کو نقل دیتے ہیں اور خود ان بچوں کے جگہ پر متبادل بچوں سے پرچے حل کرواتے ہیں سروئے کیا جائے آٹھ جماعت پاس بچے کو اپنا نام تک لکھنا نہیں آ رہا ہے تعلیم کی زبول حالی کی ذمہ داری لینے کے لئے کوئی بھی تیار نہیں ہے کیونکہ محکمہ تعلیم ضلعی آفسران بھی خانہ پوری کرنے کو ترجیح دیتے ہیں کاغذی کاروائی میں تعلیم کا حالت بہتر دیکھا کر وقت گزار رہے ہیں اگر یہی سلسلہ رہا آنے والا نسل پڑھا لکھا جاہل معاشرہ کے منہ پر لگے گا چھتر کے عوامی سماجی فلاحی حلقوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا ہے چھتر کی علاقہ میں تعلیم کی زبول حالی کا نوٹس لیا جائے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close