معروف صحافی حامد میر نے صحافت کا شعبہ چھوڑنے پر غور شروع کردیا

دباؤ کی وجہ سے پچاس فیصد سچ بھی نہیں بول پاتا ہوں

اسلام آباد (ریپبلکن نیوز) پاکستان کے معروف صحافی حامد میر نے صحافت کا شعبہ چھوڑنے پر غور شروع کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق معروف صحافی اور اینکر پرسن حامد میر کی جانب سے ایک ویب سائٹ کو دیے گئے انٹرویو میں انکشاف کیا گیا ہے کہ وہ صحافت کا شعبہ چھوڑنے پر غور کر رہے ہیں۔

حامدمیر کا کہنا ہے کہ مجھے افسوس ہے کہ صحافتی فرائض کی انجام دہی کے دوران 50 فیصد سچ بھی نہیں بول پاتا۔ ان پر گزشتہ کچھ سالوں سے بہت دباو ہے۔ یہ دباو اس حد تک ہے کہ مجھے لگتا ہے کہ میں اسکرین پر 50 فیصد بھی سچ نہیں بول پا رہا۔ گزشتہ کچھ برسوں سے اس تمام صورتحال کے باعث شدید کشمکش کا شکار ہوں۔ اسی لیے اب صحافت چھوڑنے کیلئے سنجیدگی سے غور شروع کر دیا ہے۔

یاد رہے کہ مسئلہ بلوچستان پر پروگرام کرنے پر پاکستانی خفیہ اداروں کی جانب سے حامد میر پر جان لیوا حملہ بھی ہوچکا ہے جس میں وہ معجزانہ طور پر بچ گئے تھے جس کے بعد بلوچستان کے مسئلے پر حامد میر نے بولنا اور لکھنا چھوڑ دیا تھا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close