داعش کا خلیفہ البغدادی زندہ، نئی تقریر میں پیروکاروں کو صبر واستقامت کی تلقین

نیوزڈیسک(ریپبلکن نیوز) مزہبی دہشتگرد گروپ داعش کے خلیفہ ابوبکر البغدادی زندہ ہیں ۔انھوں نے جمعرات کو سوشل میڈیا پر جاری کردہ ایک صوتی ریکارڈنگ کی صورت میں اپنے زندہ ہونے کا ثبوت دیا ہے اور اپنے پیروکارں سے کہا ہے کہ وہ صبر واستقامت اور استقلال کا مظاہرہ کریں۔

البغدادی کی یہ صوتی ریکارڈنگ 46 منٹ طویل ہے۔ان کی یہ تقریر یوٹیوب اور ٹیلی گرام ایپلی کیشن پر اپ لوڈ کی گئی ہے۔اس میں وہ اپنے پیروکاروں سے مخاطب ہوکر یہ کہہ رہے ہیں کہ ’’موصل(عراق) ، سرت(لیبیا) ، الرقہ اور حماہ (شام)  میں جو جانیں قربان کی گئی ہیں، انھیں وہ رائیگاں نہ جانے دیں‘‘۔

انھوں نے اپنی تقریر میں مزید کہا کہ ’’ امریکا ، یورپ اور روس خوف اور دہشت زدگی کی حالت میں رہ رہے ہیں اور انھیں ہر دم ’’ مجاہدین‘‘ کے حملوں کا دھڑکا لگا رہتا ہے‘‘۔

داعش کے خلیفہ کی اس صوتی ریکارڈنگ سے ان کی موت کی تمام دعوے بھی جھوٹ ثابت ہوئے ہیں۔اس سے پہلے نومبر 2016ء میں آخری مرتبہ ان کی ایک ریکارڈنگ منظرعام پر آئی تھی۔اس کے بعد گذشتہ مہینوں کے دوران میں روسی اور امریکی حکام نے متعدد مرتبہ فضائی حملوں میں ان کی ہلاکت کے دعوے کیے تھے لیکن کسی مستند ذریعے سے ان کی موت کی تصدیق نہیں کی تھی۔

ابوبکر البغدادی نے اپنی اس تقریر میں شمالی کوریا کی امریکا اور جاپان پر جوہری حملے کی دھمکیوں کا حوالہ دیا ہے۔اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ یہ تقریر حال ہی میں ریکارڈ کی گئی ہے۔قزاقستا ن کے دارالحکومت آستانہ میں اس ماہ کے اوائل میں ہونے والی کانفرنس کا بھی تقریر میں حوالہ دیا گیا ہے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close