مشکے میں اجتماعی قبر سے تین لاپتہ افراد کی لاشیں بر آمد۔ شیر محمد بگٹی

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز)بلوچ ری پبلکن پارٹی کے مرکزی ترجمان شیرمحمد بگٹی نے اپنے جاری ہونے والے بیان میں کہا ہے کہ نام نہاد اسلامی ریاست پاکستان کی جانب سے رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں بھی بلوچستان میں مظالم اور انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں کوئی کمی نہیں لائی گئی ہے جبکہ ان کی شدت میں اضافہ کیا جارہا ہے۔ شیرمحمد بگٹی نے کہا کہ اسلام کا قلعہ ہونے کے دعویدار ریاست کی فورسز بلوچستان میں بے گناہ بلوچوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ رہی ہیں۔ چار دن قبل مشکے میں آپریشن کے دوران لاپتہ کیے جانے والے تین معصوم بلوچوں کی گزشتہ روز مشکے کے علاقے مرماسی سے ایک اجتماعی قبر میں لاشیں برآمد ہوئی ہیں جنھیں دوران حراست تشدد کے بعد شہید کرکے انکی گولیوں سے چھلنی مسخ شدہ لاشیں اجتماعی قبر میں دفنا دی گئی ہیں۔ شہید ہونے والوں کی شناخت ولی محمد ولد داد محمد، نصراللہ ولد محمد نور اور عبدالصمد ولد نور بخش کے نام سے ہوئی ہے۔ شیرمحمد بگٹی نے کہا کہ بین الاقوامی سطح پر بلوچ سیاسی کارکنوں کی جانب سے بلوچستان میں جاری ریاستی مظالم اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کو اجاگر کرنے کے ردعمل میں ان میں مزید تیزی لائی گئی ہے۔ نہتے آبادیوں کے خلاف فوجی کاریوں، جبری گمشدگیوں اور مسخ شدہ لاشوں کے پھینکنے کا سلسلہ تیز کیا گیا ہے۔ شیرمحمد بگٹی نے عالمی برادری اور انسانی حقوق کے بین الاقوامی اداروں سے اپیل کی کہ بلوچستان میں جاری ریاستی جنگی جرائم کا نوٹس لیتے ہوتے بلوچ نسل کشی کو روکنے میں اپنا فوری عملی کردار ادا کریں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close