کیچ سے تین بلوچ فرزندفوج کے ہاتھوں لاپتہ، متعدد گھر تباہ کردئیے گئے

تربت (ریپبلکن نیوز) پاکستانی فورسز ہاتھوں ایک بلوچ فرزند حراست کے بعد لاپتہ،یہاں آمدہ اطلاعات کے مطابق گزشتہ روز پاکستانی فوج نے مند کے علاقے گونک میں صالح محمد کے گھر پر دھاوا بول کر خواتین و بچوں کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا اور گھروں میں موجود تمام اشیا کو لوٹنے کے ساتھ بدو ولد صالح محمد کو حراست بعد لاپتہ کردیا۔

جبکہ دشت کے علاقے کپکپار میں قابض پاکستانی فورسز نے ایک گھر پر چھاپہ مار کر خواتین و بچوں تشدد کرنے کے بعد دو بلوچ فرزندوں حراست میں لیکر لاپتہ کردیا جن کی شناخت رستم ولد الہی بخش اور بادل ولد حدا بخش کے نام سے ہوئی جو کپکپار رہائشی ہیں ادھر تمپ کے علاقے نذر آباد پاکستانی فوج نے کئی گھروں کو بلڈوز کردیا،اطلاعت کے مطابق پاکستانی زمینی فوج نے تمپ کے علاقے نذر آباد اور ملک آباد میں کئی گھروں کو نذر آتش کر دیا، مذکورہ علاقوں میں پاکستانی فوج نے گھروں میں لوٹ مار کے بعد شہید عاصم فقیر اور انور نامی شخص کے گھروں کو لوٹ مار کے ساتھ بلڈوز کر کے منہدم کردیا،جبکہ کئی گھروں کو نذر آتش کر دیا گیا،پاکستانی زمینی فوج کے ساتھ ٹریکٹر اور بلڈوز کے ساتھ کچھ نقاپ پوش لوگ بھی دیکھے گئے ہیں،تاحال زمینی فوج کا مذکورہ علاقوں میں آپریشن جاری ہے، جبکہ عاظم نامی شخص کے گھروں کو بلڈوز کے ذریعے منہدم کرنے کی بھی اطلاعات ہیں۔دوران آپریشن خواتین و بچوں پر تشدد کی بھی اطلاعات ہیں۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close