چینی قونصلیٹ حملے کا مرکزی سہولت کار شارجہ سے گرفتار، ڈی آئی جی عبداللہ شیخ کا دعوی

نیوز ڈیسک (ریپبلکن نیوز) کراچی میں چینی قونصلیٹ حملہ کیس کے مرکزی سہولت کار کو شارجہ سے گرفتار کرلیا گیا۔

ڈی آئی جی محکمہ انسداد دہشتگردی عبداللہ شیخ نے دعوی کیا ہے کہ چینی قونصلیٹ پر حملے کے وقت سہولت کار شہر میں موجود تھا۔

ڈی آئی جی عبداللہ شیخ کا دعوی یے کہ ملزم کوحملے کیلئے 9 لاکھ روپے ملے تھے، ملزم نے پانچوں ملزمان کو رقم فراہم کیں، ملزم کے رابطے بیرون ممالک سے بھی ہیں۔

ڈی آئی جی سی ٹی ڈی کے مطابق ملزم کو سی ٹی ڈی کی نشاندہی پر گرفتار کیا گیا۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس 23 نومبر کو صبح کے وقت کراچی کے علاقے کلفٹن میں واقع چینی قونصل خانے پر حملے کیا گیا تھا۔

کارروائی میں 2 پولیس اہلکار کانسٹیبل عامر خان اور اے ایس آئی اشرف داؤد ہلاک ہوئے جبکہ ایک سیکیورٹی گارڈ زخمی بھی ہوا، تاہم قونصل خانے کا چینی عملہ واقعے میں بالکل محفوظ رہا تھا۔

یہاں یہ بھی قابل زکر ہے کہ بلوچ قوم پرست حقلوں کا کہنا ہے کہ امارات سے ایک بلوچ نوجوان کو وہاں کی خفیہ اداروں نے اہلکاروں نے حراست میں لے رکھا ہے جس کا نام راشد بلوچ بتایا جارہا ہے اور وہ وہاں مزدوری کے غرض سے مقیم تھا تاہم امارارتی حکام کی جانب سے ابھی تک کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close