کوئٹہ سمیت ملک بھر میں افغان مہا جرین کے شناختی کارڈ بلاک کر نے اور ان کی واپسی کے فیصلوں کا خیر مقدم کر تےہے. کوآرڈینیشن کمیٹی حاجی علی مدد جتک

jatakکوئٹہ (ری پبلکن نیوز ) پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق صوبائی وزیراور ممبر کوآرڈینیشن کمیٹی حاجی علی مدد جتک نے کوئٹہ سمیت ملک بھر میں افغان مہا جرین کے شناختی کارڈ بلاک کر نے اور ان کی واپسی کے فیصلوں کا خیر مقدم کر تے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت افغان مہا جرین کے شناختی کارڈ بنا نے والے ان سہولت کاروں کے خلاف بھی موثر کارروائی عمل میں لائے جو اسمبلیوں میں بیٹھ کر مہا جرین کے کارڈز بنوا نے کیلئے آواز بلند کر تے ہیں ان خیالات کا اظہا راپنے جاری کر دہ بیان میں کیاانہوں نے کہا کہ انتہائی افسوسناک امر ہے کہ سیاسی جماعتوں کی جانب سے نادرا پر افغان مہا جرین کے کارڈز بنا نے کیلئے دباؤ ڈالا جا تا ہے اور اب یہ خبریں کسی سے پوشیدہ نہیں رہیں ہمارا موقف روز اول سے یہی رہا ہے کہ افغان مہا جرین اس ملک اور بالخصوص صوبے پر بوجھ بنتے جا رہے ہیں ہم بحیثیت مسلمان اور ہمسایہ ملک ان کی مہمان نوازی کر تے کرتے اب تھک چکے ہیں جبکہ یہ مہمان اب ہمارے گھر کے مالک بن بیٹھے ہیں جن کی واپسی ملک کی معیشت کے استحکام اور اس ملک کے باسیوں کے حقوق کے تحفظ کیلئے نا گزیر ہے انہوں نے کہا کہ اب وقت آچکا ہے کہ افغان مہا جرین کی واپسی کیلئے اقدامات اٹھانا ہو نگے کیونکہ ان کی موجودگی ہمیں معاشی طور پر غیر مستحکم کر رہی ہے جبکہ بلوچستان اور ملک میں پائی جانیوالی بدامنی میں افغان مہا جرین کی ملوث ہونے کے شواہد اس بات کی غمازی کر تے ہیں کہ ان کی موجودگی ملک کی بدنامی کے باعث بن رہی ہے انہوں نے کہا کہ اگر افغان صدر یہ سمجھتے ہیں کہ ان کا ملک اپنے لوگوں کا بوجھ برداشت نہیں کرسکتا تو انہیں اپنے دوست ملک بھارت کے پاس ان مہاجرین کو بجھوا دیں وہ ان کا بہتر خیال رکھیں گے ہم نے اپنی ذمہ داری پوری کر دی اور اب مزید اس ذمہ داری کا بوجھ نہیں اٹھا سکتے انہوں نے کہا کہ ان سیاسی جماعت کے خلاف بھی لائحہ عمل طے کر نے کی ضرورت ہے جو مہا جرین کی یہاں موجودگی کیلئے جواز پید کر رہی ہیں ہمیں اپنے ملک اور اس کی معیشت کو ہر چیز پر مقدم رکھنا ہو گا یہاں کے عوام باشعور اور آزاد خیال ہے سیاست کو سمجھتے ہیں اور اس ملک میں جمہوری نظام کو مزید استحکام بخشنے کیلئے کوشاں ہیں لہٰذا ہمیں اپنی سیاست اپنے عوام پر کر نا چاہئے دیار غیر سے آئے لوگ کبھی اس ملک کے خیر خوا ہ نہیں ہو سکتے لہٰذا انہیں فوری طور پر ان کے ملک واپس بھیجنا ہوگاعلی مدد جتک نے کہا کہ نادرا ہمارا قومی ادارہ ہے اس پر کسی سیاسی جماعت کے دباؤ برداشت نہیں کریں گے ڈی جی نادرا بلوچستان اپنے فرائض ذمہ داری سے نبھا رہے ہیں انہوں نے جرأت کا مظاہرہ کرتے ہوئے نام نہاد قوم پرست سیاسی جماعت کے خلاف وفاقی حکومت کو خط لکھ کر ان کا پول کھول دیا ہے قوم پرستی کی سیاست ضرور ہونی چاہئے قوم پرستی اپنی قوم کیلئے ہونی چاہئے ناکہ افغان انٹیلی جنس لوگوں کیلئے ہونی چاہئے جو پاکستان میں حالات کو خراب کرنے کے ذمہ دار ہیں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close