ایران اب بھی یمنی باغی ملیشیا تک میزائل اور دیگر اسلحہ کی ترسیل کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے

الریاض پر داغا گیا میزائل الحدیدہ بندر گاہ سے اسمگل کیا گیا: عرب اتحاد

نیوزڈیسک(ریپبلکن نیوز) یمن میں دستوری حکومت کی عمل داری کی بحالی کے لیے کام کرنے والے عرب عسکری اتحاد نے کہا ہے کہ سعودی عرب کے دارالحکومت الریاض پر داغا گیا بیلسٹک میزائل الحدیدہ بندرگاہ سے یمن اسمگل کیا گیا تھا۔

سعودی زرائع ابلاغ کے مطابق جمعہ کے روز عرب فوجی اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے ایک بیان میں کہا کہ سعودی عرب کے شہر الریاض پر داغا گیا میزائل یمنی باغیوں تک الحدیدہ گذرگاہ سے پہنچایا گیا تھا۔

خیال رہے کہ نومبر کے اوائل میں سعودی فضائیہ نے یمن کی طرف سے داغے گئے بیلسٹک میزائل کو الریاض کے قریب شاہ خالد ہوائی ادے کے قریب تباہ کردیا گیا تھا تاہم اس واقعے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ ایران اب بھی یمنی باغی ملیشیا تک میزائل اور دیگر اسلحہ کی ترسیل کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے۔

المالکی نے بتایا کہ 42 بحری اور ہوائی جہازوں کو امدادی سامان لے کر یمن کے متاثرہ علاقوں تک جانے کی اجازت دی گئی ہے۔ انہوں نے ایک بار پھر اقوام متحدہ پر زور دیا کہ وہ یمن کی الحدیدہ بندرگاہ کے حوالے سے اپنی ذمہ داریاں پوری کرے۔

ادھر امریکا نے عرب اتحاد کے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے جس میں دو روز قبل الحدیدہ بندرگاہ اور صنعاء کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کو امدادی آپریشنز کے لیے کھولنے کا اعلان کیا تھا۔

وائیٹ ہاؤس کا کہنا ہے کہ الحدیدہ بندرگاہ اور صنعاء کے ہوائی اڈے کو کھولنے سے یمن میں جاری انسانی بحران کے حل میں مدد ملے گی۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close