ایران نے کردستان کے ساتھ سرحدی گزرگاہ "باشماغ” دوبارہ کھول دی

نیوزڈیسک (ریپبلکن نیوز) عراق کے شہر سلیمانیہ کے چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سربراہ سيروان محمد نے بدھ کے روز بتایا ہے کہ سرحدی گزرگاہ باشماغ کے کھلنے کے ساتھ ہی عراقی کردستان اور ایران کے درمیان تجارتی آمد و رفت کا پھر سے آغاز ہو گیا ہے۔

عراقی چینل السومریہ سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ دیگر گزرگاہوں کے راستے تجارتی آمد و رفت آئندہ دنوں میں شروع ہو جائے گی۔ سیروان کے مطابق گزشتہ دنوں کے دوران سرحدی گزرگاہوں کی بندش کے سبب کردستان اور عراق میں تجارتی آمد و رفت پر گہرے اثرات مرتب ہوئے۔

ادھر ایرانی سرکاری ذرائع ابلاغ نے بدھ کے روز بتایا ہے کہ تہران نے عراقی کردستان کے ساتھ اپنی سرحدی گزرگاہ کو کھول دیا ہے جو 25 ستمبر کو کردستان میں آزادی سے متعلق ریفرینڈم کے انعقاد کے بعد بند کر دی گئی تھی۔

ایرانی میڈیا نے یہ بھی بتایا ہے کہ کردستان کے شہر اربیل میں ایرانی قونصل خانے کی جانب سے جاری بیان میں بدھ 25 اکتوبر کی صبح سے "باشماق مریوان” گزرگاہ کھولنے کا اعلان کیا گیا ہے۔ مذکورہ گزرگاہ کو بغداد اور اربیل کے درمیان کشیدگی میں اضافے کے بعد عراقی مرکزی حکومت کی درخواست پر ایرانی جانب سے بند کر دیا گیا تھا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close