بی ایل ایف اور بی این ایم کے علاوہ دیگر تمام تنظیموں میں فردِ واحد کی حکمرانی ہے۔ واحد قمبر

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز) بلوچستان لبریشن فرنٹ کے کمانڈر واحد قمبر نے دی بلوچستان پوسٹ نامی ایک آن لائن نیوز میں شائع ہونے والے اپنے ایک حالیہ مضمون میں بی ایل ایف اور بلوچ نیشنل موومٹ کے علاوہ دیگر تمام آزادی پسند مسلح اور سیاسی تنظٰموں کو غیر جمہوری تنظیمیں قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بی ایل ایف اور بی این ایم کے علاوہ دیگر تمام تنظٰیموں میں پالیسی ساز اداروں کا فقدان ہے۔

واحد قمبر نے کہا ہے کہ وہ تاریخ کے تناظر میں اپنے تجربات کی بنیاد پر یہ کہہ سکتے ہیں کہ بلوچ نیشنل موومنٹ اور بلوچستان لبریشن فرنٹ کے علاوہ دیگر تمام تنظٰیمیں اپنے معیار پر پورا نہیں اترتے کہ انہیں پارٹی یا تنظٰم قرار دیا جاسکیں۔

انہوں نے اپنے مضمون میں لکھا ہے کہ ان دو تنظیموں کے علاوہ دیگر تمام تنظیموں میں جمہوریت، سیاسی شعور اور اختیارات کی تقسیم اور جمہوری مرکزیت کی کمی ہے۔ اور انہوں نے دعوہ کیا ہے کہ دیگر تمام تنظیموں میں فردِ واحد کی حکمرانی ہے جبکہ ساتھ ساتھ سیاسی اداروں کی کمی اور جمہوری مرکزیت کی کمی کے بھی شکار ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:

بی آر اے، یو بی اے اور لشکرِ بلوچستان کا اتحاد مثبت پیشرفت ہے۔ میر عبدالنبی بنگلزئی

مسلح تنظیموں کا مشترکہ محاز پر یکجا ہونا جنگ آزادی کیلئے نیک شگون ہے، یونائیٹڈ بلوچ آرمی

بلیدہ میں قابض پاکستانی فوج پر حملہ، چار بلوچ فرزند فورسز کے ہاتھوں اغوا

واحد قمبر نے اپنے مضمون میں بہت سی باتوں کا زکر کیا ہے، جبکہ انہوں نے صرف بلوچستان لبریشن فرنٹ اور بلوچ نیشنل موومنٹ کو قومی ادارہ قرار دیاہے جس سے یقینا دیگر تمام تنظٰموں کے کارکنوں کے جزبات کو تہس پہنچی ہوگی۔ کیونکہ ہر کوئی اس بات سے واقفیت رکھتا ہے کہ تمام آزادی پسند تنظیموں کا اپنا اپنا ڈانچہ موجود ہے جن کے رہنما اور کارکنان بھی مختلف سرگرمیوں میں نظر آتے رہتے ہیں۔ لیکن تمام تنظیموں کو غیر جمہوری، غیر سیاسی اور فردی تنظٰم قرار دینا واحد قمبر کی اپنی سوچ پر سوالات اٹھا رہے ہیں۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close