لشکرِاسلام کا کمانڈر ڈرون حملے میں ہلاک

کابل(ریپبلکن نیوز ) افغان صوبے ننگر ہار میں امریکی ڈرون حملے میں بدنام زمانہ عسکریت پسندمنگل باغ ماراگیا ہے ۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق منگل باغ کالعدم شدت پسند تنظیم لشکر اسلام کا سرغنہ تھا جبکہ پاکستانی حکومت نے اس کے سر کی قیمت 2 کروڑ روپے مقرر کررکھی تھی۔
واضح رہے کہ 22 جولائی کی شب افغان صوبے ننگر ہار کے علاقے خودی خولہ میں امریکی ڈرون حملے میں منگل باغ شدید زخمی ہوگیا تھا جس کے بعد اسے مقامی طور پر ہی طبی امداد دی جارہی تھی تاہم وہ زخموں کی تاب نہ لاسکا اور دم توڑگیا۔ طالبان اور انٹیلی جنس ذرائع نے منگل باغ کی ہلاکت کی تصدیق کردی ہے جبکہ لشکر اسلام نے تاحال اپنے سرغنہ کی ہلاکت کی تصدیق نہیں کی ۔
منگل باغ کا اصل نام حاجی عامر منگل باغ تھا اور وہ پاکستان کے زیر انتظام خیبر ایجنسی کے علاقے تحصیل باڑہ کے آفریدی قبیلے سے تعلق رکھتا تھا۔منگل باغ پہلے ایک ٹیکسی ڈرائیور تھا لیکن بعد ازاں اس نے اپنا عسکریت پسند گروپ لشکر اسلام کے نام سے تشکیل دے دیا تھا. 

مزید خبریں اسی بارے میں

Close