لاپتہ بلوچ اسیران شہداء کے بھوک ہڑتالی کیمپ کو 2354دن ہوگئے

VBMP01کوئٹہ ( ریپبلکن نیوز) لاپتہ بلوچ اسیران شہداء کے بھوک ہڑتالی کیمپ کو 2354دن ہوگئے اظہا ریکجہتی کرنے والوں میں کراچی سے سیاسی سماجی کارکن غوفر جان بلوچ امیر بخش بلوچ،اپنے ساتھیوں سمیت لاپتہ شہداء کے لواحقین سے اظہار ہمدردی کی اور انہوں نے کہاکہ جب کوئی اپنے وطن پر شہید ہوتا ہے تو قید کی زنجیر یں ٹوٹ جاتی ہے اور موت کے بعد ایک نئی زندگی کا آغاز ہوتا ہے۔ وہ جو خوشی اور مسرت کے لئے زندہ رہے اور ان ہی کے لئے موت سے ہمکنار ہوئے وہ کبھی غم و آفسوس کے ساتھ یاد نہیں کئے جائیں وائس فار مسنگ پرسنز کے وائس چیئرمین ماما قدیربلوچ نے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ ایک با عمل انقلابی کی زندگی آزادی کی سمت کیلئے روشنی اور اس کی موت کی تاریخ میں اپنے آدرش کے لئے سنگ میل اور مشعل راہ ہوتی ہے کیونکہ ایک سچاآدمی وہ راستہ اختیار نہیں کرتا جہاں فائدہ ہو بلکہ وہ راستہ اختیار کرتا ہے جہاں اسے فرض پورا کرنا ہو۔ ماما قدیر نے مزید کہاکہ انقلابی اپنے نظریئے کی رہنمائی اور تجربے کی کمال مہارت سے ایسے مرحلوں میں جرات کے ساتھ اپنے آدرشوں اپنے مقاصد کے اصولوں کا واضح ڈھنگ سے اعلان کرکے آزادی کی سمت اپنے راستے کا تعین کرتا ہے تاکہ نہ تو دوست اور نہ ہی دشمن دھوکے میں رہے ۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close