مولانا فضل الرحمان کی زرداری سے طویل ملاقات، نوازشریف سے ملنے کا مشورہ

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) جمعیت علما اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے سابق صدر آصف زرداری سے ملاقات کی ہے جس میں پاناما لیکس کے معاملے کے بعد پیدا ہونے والی سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمان نے سابق صدر کو نواز شریف کا خصوصی پیغام پہنچایا اور انہیں وزیر اعظم سے ملاقات کا مشورہ دیا ، دونوں کے درمیان ملاقات میں یہ اتفاق کیا گیا کہ سسٹم کو ڈی ریل نہیں ہونے دیں گے ۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق دونوں رہنمائوں کی ملاقات پارک لین کے فلیٹ میں ہوئی جہاں سابق صدرمقیم ہیں اور دونوں رہنماو¿ں کے درمیان ملاقات برطانوی وقت کے مطابق دن 11 بجے شروع ہوئی جو 5گھنٹے تک جاری رہی اور 4 بجے ختم ہوئی ۔ جمعیت علما اسلام کے ترجمان نے دونوں رہنماو¿ں کی ملاقات کے حوالے سے کوئی بھی تبصرہ کرنے سے انکار کردیا ہے تاہم مقامی میڈیا کے مطابق ملاقات کے دوران مولانا فضل الرحمان نے سابق صدر آصف علی زرداری کو وزیر اعظم سے ملاقات کا مشورہ دیا اور تمام امور پر اتفاق رائے پیدا کرنے کا کہا لیکن دونوں رہنماو¿ں میں وزیر اعظم کی سابق صدر سے ملاقات پر اتفاق نہیں کیا جاسکا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ مولانا نے ملاقات کے دوران سابق صدر تک وزیر اعظم نواز شریف کا خصوصی پیغام بھی پہنچایا۔
ملاقات میں سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ پیپلزپارٹی چاہتی ہے کہ پاناما کے معاملے پرتحقیقات ہوں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جمہوریت کیخلاف کسی بھی سازش کاپیپلزپارٹی حصہ نہیں بنے گی اور نہ ہی ان لوگوں کی سازش کاحصہ بنیں گے جوشارٹ کٹ کے ذریعے اقتدارحاصل کرناچاہتے ہیں۔
دوسری طرف مولانا فضل الرحمان کاسابق صدر کو کہنا تھا کہ آپ کونوازشریف سے ملاقات کرنی چاہیے ۔ نوازشریف سے ملاقات کرکے تمام متنازع امورپراتفاق پیدا کیا جائے اور اگر سندھ کے معاملے پروفاق سے تحفظات ہیں تواس پروزیراعظم سے بات کریں۔
مولانا فضل الرحمان کا مزید کہنا تھا کہ ہرقسم کی کرپشن کے خلاف تحقیقات ہونی چاہئیں پانامامعاملے کی تحقیقات ہونی چاہئیں پرمخصوص افرادکونشانہ نہیں بناناچاہیے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close