لبرل بلاگر یامین رشید کو چاکو سے حملہ کر کے موت کے گھاٹ اتاردیا گیا

مالی(ریپبلکن نیوز) سیاسی شورش کی شکار مالدیپ کے دارالحکومت مالدیون میں ایک لبرل بلاگر یامین رشید پر چاقو سے حملہ کر کے موت کے گھاٹ اتار دیا گیا ہے، یہ بات اس کے اہل خانہ اور ساتھیوں نے اتوار کو بتائی ہے، اس کی عمر 29 برس تھی۔ رشید کی لاش اتوار کی صبح اپنے اپارٹمنٹ میں ایک گڑھے میں پائی گئی، اس کی گردن اور سینے پر کئی زخم تھے، وہ ہسپتال لے جانے کے تھوڑی دیر بعد دم توڑ گیا، یہ بات اس کے اہل خانہ نے بتائی ہے۔ اس کے بلاگ ڈی ڈیلی پینک کی انتہائی قابل قدر تعداد میں فالوورز تھے اور وہ تقریباً 340,000 سنی مسلمانوں کے دیس میں سیاستدانوں کے بارے میں مذاق کرنے کے لئے مشہور تھا۔ اس نے اپنے بلاگ پر لکھا تھا کہ ’’دی ڈیلی پینک‘‘ کے ساتھ میں امید کرتا ہوں کہ میں خبریں کوور کروں گا اور اس پر تبصرے کروں گا اور مالدیپ کے مزاح کے حصے عاری سیاستدانوں کے بارے میں مزاح نگاری کروں گا۔ رشید مالدیپ میں گزشتہ پانچ برسوں میں نشانہ بننے والی تیسری میڈیا شخصیت ہے۔ بلاگر اسماعیل رشید جو ہلاث کے نام سے بھی جانا جاتا تھا، پر 2012ء میں نامعلوم افراد نے چاقو حملہ کر کے زخمی کیا تھا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker