بلوچ ریپبلکن پارٹی کی جانب سے لندن میں آگاہی مہم پانچویں روز بھی جاری رہا

لندن (ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن پارٹی کی جانب سے برطانیہ کے شہر لندن میں لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے آگاہی مہم آج پانچویں روز بھی جاری رہا۔ آگاہی مہم کا مقصد بلوچستان میں جبری گمشدگیوں کے خلاف آواز بلند کرنا ہے۔

بلوچ ریپبلکن پارٹی کی جانب سے سات روزہ آگاہی کیمپ کے انعقاد کا اعلان کیا گیا تھا جو آج پانچویں روز بھی جاری رہا۔ آگاہی مہم برطانیہ کے شہر لندن میں جاری رہا جس میں بی آر پی برطانیہ کےصدر منصور بلوچ بھی موجود تھے۔

منصور بلوچ کا کہنا ہے کہ وہ لاپتہ افراد کی بازیابی کے لیے آگاہی مہم چلا رہے ہیں اور انکا مطالبہ ہے کہ بلوچستان سے جبری طورپر لاپتہ کیے گئے افراد کو طوری طورپر بازیاب کیا جائے۔  منصور بلوچ نے کہا کہ ریاست اپنی پرانی پالیسیوں پر تاحال عمل پیرا ہے اور بلوچستان بھر میں جبری گمشدگیوں کا سلسلہ جاری ہے۔

اس موقع پر برطانیہ میں سرگرم بلوچ ایکٹویسٹ عبداللہ بلوچ بھی موجود تھے جن کا کہنا تھا کہ پاکستان بلوچستان میں سنگین انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں میں ملوث ہے اور بلوچوں کو جبری طورپر لاپتہ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ چند لوگوں کی بازیابی ایک خوش آئند عمل ہے لیکن تاحال لوگوں کی جبری گمشدگیوں کا سلسلہ جاری ہے۔

آگاہی مہم میں شامل کارکان نے کہا کہ پاکستانی ریاست بلوچ قوم کی نسل کشی میں مصروف ہے، بلوچستان میں ملٹری آپریشنوں میں لوگوں کو جبری طورپر لاپتہ کیا جاتا ہے، ہزاروں بلوچوں کو شہید کیا گیا ہے، دورانِ فوجی کاروائی گھروں میں لوٹ مار کیا جاتا ہے۔ بلوچستان میں حالات سنگین حد تک خراب ہیں جنہیں پاکستانی اور بین القوامی میڈیا نہیں دکھاتا۔

 

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button