بی ایل ایف نے مختلف واقعات کی زمہ داری قبول کر لی

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز)بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے نامعلوم مقام سے سٹیلائیٹ فون کے ذریعے بات کرتے ہوئے کہا کہ 21 اور 22 جنوری کی درمیانی شب سرمچاروں نے ضلع کیچ میں بالگتر کے علاقے سری میتگ گڈگی میں پاکستانی فوج کی چوکی پر راکٹوں سے حملہ کرکے قابض فوج کو بھاری جانی و مالی نقصان پہنچایا۔ کل 22 جنوری کو بالگتر کے علاقے نلی میں قابض فوج نے سرمچاروں کا راستہ روک کر گھیرنے کی کوشش کی تو قابض فوج اورسرمچاروں کے درمیان جھڑپیں شروع ہوئیں۔ جھڑپ میں سرمچاروں نے بہترین گوریلا حکمت عملی کا مظاہرہ کرتے ہوئے دشمن کو شکست دیکر بحفاظت نکلنے میں کامیاب ہوئے اور قابض فوج کو بھاری نقصان پہنچایا، جس کی وجہ سے کیچ ہیڈکوارٹرز سے کئی گاڑیاں اور ایمبولینس جائے وقوعہ اور بالگتر پہنچ گئے ۔ یہ علاقے سی پیک منصوبے کی عین روٹ پر واقع ہیں، اسی وجہ سے یہاں ایف ڈبلیو او کی اہلکاروں اور تعمیرات کی حفاظت کیلئے کئی چوکی اور کیمپ قائم کئے گئے ہیں۔ لیکن اس کے باوجود بلوچ سرمچاروں نے کئی ایف ڈبلیو او اہلکاروں سمیت فوجیوں کو ہلاک کیا ہے۔ بلوچ قوم کی منشا کے بغیر جاری منصوبہ کامیابی سے مکمل نہیں ہوپاسکے گا۔ بلوچستان کی آزادی تک پاکستانی فوج پر حملے جاری رہیں گے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close