بیجنگ حکومت نے قبائلی بلوچ علیحدگی پسندوں سے رابطوں کی تردید کردی

نیوزڈیسک (ریپبلکن نیوز) چین نے فنانشل ٹائمز میں شائع ہونے والے دعوے کی تردید کر دی ہے جس میں کہا گیا تھا کہ بیجنگ حکومت گزشتہ پانچ برسوں سے قبائلی بلوچ علیحدگی پسندوں سے مسلسل رابطوں میں ہے۔

فنانشل ٹائمز جریدے کے مطابق چینی حکومت بلوچستان میں اقتصادی راہداری منصوبےاور اپنے سرمایہ کو محفوظ کرنے کے لیے گزشتہ پانچ برسوں سے قبائلی بلوچ علیحدگی پسندوں سے مسلسل رابطوں میں رہا ہے۔

چین کے وزیر خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے  فنانشل ٹائمز میں شائع ہونے والے دعوے کو رد کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیجنگ حکومت کا بلوچ علیحدگی پسندوں سے کسی بھی قسم کا کوئی رابطہ نہیں رہا ہے۔

اسی بارے میں: دشمن اپنے سازشی پروپیگنڈوں میں بہت حد تک کامیاب دکھائی دیتا ہے

وزیر خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ البتہ انکی حکومت چینی منصوبوں، جن میں چین پاکستان اکنامک کوریڈور شامل ہے  کی تحفظ اور سیکیورٹی کے لیے مسلسل پاکستانی حکام سے رابطوں میں ہیں۔

بیجنگ حکومت کی جانب سے بلوچ علیحدگی پسندوں سے  مزاکرات اور رابطوں کی تردید کے بعد بلوچ قبائل کی آزادی کی جدوجہد میں اہمیت واضح ہوگئی ہے۔ اور بات کا اشارا ہے کہ بلوچ قبائلی رہنماوں کی بلوچستان کی آزادی کی جنگ میں کردار غیر معمولی ہے۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close