کشمیر اور بھارت کے حالات خراب کرنے میں پاکستان ملوث ہے. بھارتی وزیرداخلہ

نئی دہلی(ریپبلکن نیوز) بھارتی وزیرداخلہ نے مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں کی ہلاکت پر اپنی فوج کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ احتجاجی مظاہروں کے دوران فوج کو بھی نقصان کا سامنا کرنا پڑا اور کئی اہلکار زخمی ہوئے جس کے باوجود فوج نے صبر سے کام لیا۔ انہوں نے کانگریس رکن اسمبلی جیوترا دتیا سندیا کے مقبوضہ کشمیر میں رائے شماری کے بیان پر کہا کہ وقت گزرنے کے ساتھ کشمیر میں رائے شماری کا مطالبہ کیا جاتا ہے تاہم موجودہ حالات کے تناظر میں اس کی کوئی ضرورت نہیں۔

اجلاس کے دوران احتجاج کو روکنے کے لئے پیلٹ گن ( چھرے والی پستول) کے استعمال پر بات کرتے ہوئے راج ناتھ سنگھ کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں چھرے والی بندوقوں کا استعمال پہلی مرتبہ نہیں ہوا اس کی ابتدا 2010 میں ہوئی تھی تاہم مظاہرین کو روکنے کے لئے چھرے والی بندوقوں کے استعمال کے سلسلے میں کمیٹی تشکیل دیں گے جو 2 ماہ میں اس حوالے سے رپورٹ پیش کرے گی اور کمیٹی کی رپورٹ کی روشنی میں ہی آئندہ چھرے والی بندوق کا استعمال کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا۔

بھارتی لوک سبھا(ایوان زیریں) میں مقبوضہ کشمیر میں اپنی فوج کا دفاع کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ کشمیر کی صورتحال کو بگاڑنے میں پڑوسی ملک پاکستان کا اہم کردار ہے اور مذہب کے نام پر کشمیر میں صورتحال خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جب کہ بھارت کو غیرمستحکم کرنے کی تمام تر کوششوں میں پاکستان کا ہاتھ ہے اور بھارت میں ہونے والی کسی بھی دہشت گردی میں پاکستان کی حمایت شامل ہوتی ہے۔ ان کا ۔

واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں تحریک آزادی کے کمانڈر برہان مظفر وانی کی ہلاکت کے بعد سے شروع ہونے والی احتجاجی لہر میں اب تک 48 کشمیری  ہلاک اور ہزاروں زخمی ہوچکے ہیں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close