بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کی جانب سے اپنے مطالبات کے حق میں لگائے گئے بھوک ہڑتالی کیمپ کو بارہ دن مکمل

کوئٹہ ( ریپبلکن نیوز)بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کے مرکزی ترجمان نے اپنے جاری کردہ بیان میں کہا کہ بارہ دن ہو رہے ہیں کہ نئے میڈیکل کالجوں کے حوالے سے طالب علم بھوک ہڑتالی کیمپ میں بیٹھے ہیں۔ترجمان نے مزید کہا کہ سیکرٹری صحت کی جانب سے ایڈیشنل سیکرٹری کی سربرائی میں جو کمیٹی تشکیل دی گئی ہے وہ کمیٹی اپنی زمہ داریوں کو بخوبی نبھاتے ہوئے نئے میڈیکل حوالے سے جو مسائل در پیش آ رہے ہیں ان کو حل کر کے جلد از جلد کلاسز کی آغاز کیا جائے تاکہ طلباء کی وقت ضائع ہونے سے بچ جائے۔
آج بھوک ہڑتالی کیمپ میں سیاسی اور شخصیات کے ساتھ پاکستان مسلم لیگ نون کے صوبائی جنرل سیکرٹری نصیب اللہ اور جمعیت علماء اسلام کیچ کے رہنماء خالد ولید سیفی نے اظہارر یکجہتی کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس ہڑتالی کیمپ کی بھر پور حمایت کرتے ہیں اور ان کے مطالبات کو بالکل جائز سمجھتے ہیں کیونکہ بلوچستان پہلے تعلیمی پسماندگی کا شکار ہے اس وجہ سے ضروری ہے کہ بلوچستان کی تعلیمی پسماندگی کو دور کرنے کیلئے تعلیم کے میدان میں انقلابی اقدامات کیے جائیں ۔طلباء کے احتجاج پر حکومتی اور بااختیار طبقے کا رویہ انتہائی غیر سنجیدہ ہے جو کہ قابل مذمت ہے۔مسلم لیگ کے جنرل سیکرٹری نے کیمپ بیٹھے ہوے طلباء کو یقین دہانی کرائی کہ طلباء کے مطالبات کے حق میں زیر اعلی بلوچستان جلد بات چیت ہوگی۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker