بلوچ ریپبلکن آرمی نے ڈیرہ بگٹی میں گیس لائن اڑانے و ایف سی قلعہ پر راکٹ حملوں کی زمہ داری قبول کر لی

زامران میں منشیات فروشوں کے ایک گاڑی پر حملہ کر کے گاڑی سمیت تمام منشیات کو ضبط کرلیا ہے

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن آرمی کے ترجمان سرباز بلوچ نے مختلف کارروائیوں کی زمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ بلوچ سرمچاروں نے گزشتہ شب ڈیرہ بگٹی کے علاقے سنگسیلہ میں ایف سی کے قلعے پر راکٹوں اور خودکار ہتھیاروں سے حملہ کیا جس کے نتیجے میں دو ایف سی اہلکار ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔ جبکہ قلعے کو بھی نقصان پہنچا۔ ادھر ڈیرہ بگٹی شہر کے قریب پیرکوہ سے سوئی پیوریفکیشن پلانٹ کو جانے والی 24 انچ قطر کی گیس پائپ لائن کو جاتی تل کے مقام پر دھماکے سے اڑا دیا، جس کے بعد پیر کوہ سے سوئی کوگیس کی سپلائی مکمل طور پر بند ہوگئی۔

ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ 18 دسمبر کو زامران کے علاقے جالگی میں منشیات فروشوں کے ایک گاڑی پر حملہ کر کے گاڑی سمیت تمام منشیات کو ضبط کرلیا ہے اور منشیات سمگل کرنے میں ریاستی ادارے براہ راست ملوث ہیں جالگی میں منشیات کے خلاف کارروائی کے بعد ریاستی ادارے اور ان کے مقامی زرخرید کارندے بلوچ سرمچاروں کیخلاف متحرک ہوچکے ہیں ہم بلوچ سماج میں منشیات جیسے زہر کو پھیلانے کی اجازت ہرگز نہیں دینگےکیونکہ ریاست کا مقصد بلوچ نوجوانوں کو منشیات کے لت میں مبتلہ کرنا ہے بلوچ ریپبلیکن آرمی منشیات کے کاروبار میں ملوث ریاست کے تمام مقامی سہولت کاروں کو احتساب کے کٹہرے میں لاکر انہیں نشان عبرت بنائے گی۔ سرباز بلوچ کا مزید کہنا تھا کہ تنطیم کی کارروائیاں آزاد بلوچ ریاست کے قیام تک جاری رہینگے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close