13 جون 1999 کو بھارتی ایئرفورس نے پاکستان کے ایئربیسس پر حملے کی تیاری کرلی تھی

نئی دلی(ریپبلک نیوز) بھارتی ٹی وی این ڈی ٹی وی نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے انڈین ایئرفورسز کی کچھ دستاویزات حاصل کی ہیں جس کے مطابق فضائیہ نے 13 جون 1999 کو کنٹرول لائن کی دوسری جانب حملے کی تیاری کرلی تھی جس کے لئے تمام پائلٹوں کو حملے کے احکامات جاری کردیئے گئے تھے جب کہ پائلٹوں نے پاکستان کے نقشے اور اہداف حاصل کرنے کے ساتھ ذاتی پستولوں میں گولیاں بھی ڈال دی تھیں۔

بھارتی ٹی وی کے مطابق کارگل محاذ کے دوران انڈین کیپٹن سہراب کالیا سمیت 6 فوجیوں کی ہلاکت کے بعد پاک بھارت تعلقات میں کشیدگی پیدا ہوگئی تھی جسے کم کرنے کے لئے اس وقت کے پاکستانی وزیرخارجہ سرتاج عزیز نے اپنے ہم منصب جسونت سنگھ سے ملاقات کی تاہم 12 جون کو مذاکرات کی ناکامی کے بعد دن 4 بجے جنگی طیاروں کے تمام پائلٹوں کو طلب کیا گیا جنہیں 13 جون کی صبح کمانڈ ایئر ٹاسکنگ آرڈر دیا گیا اور ایئرفورس کی 17 اسکوارڈن کو سری نگر ایئربیس سے حملہ کرنا تھا۔

بھارتی میڈیا نے مزید دعویٰ کیا کہ مشن کے مطابق 4 ایئرکرافٹ کو آزاد کشمیر اور بی ڈی اے (بم ڈیمچ اسسمینٹ ) کو راولپنڈی میں پاک فضائیہ کی اہم ترین چکلالہ ایئربیس پر حملہ کرنا تھا،13 جون کی علی الصبح 4 بجکر 30 منٹ پر جنگی طیاروں کو حملے کے لئے تیار رہنے کے احکامات جاری کئے گئے تاہم پائلٹوں کو ایگزی کیوشن آرڈر جاری نہیں کئے گئے جس کے بعد وہ حکام بالا کی جانب سے حتمی احکامات کا انتظار کرتے رہے اور انہیں 12 بجکر 30 منٹ پر واپس آنے کے احکامات جاری کئے گئے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close