بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کی بھوک ہڑتالی کیمپ دسویں روز جاری

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز) بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کی جانب سے لگائے جانے والی بھوک ہڑتالی کیمپ دسویں روز جاری طلباء کی حالت روز با روز خراب تر ہوتی جا رہی ہے ۔جب کہ دوسری جانب حکومت کی جانب کسی طرح کا بھی اقدام دیکھنے کو نہیں مل رہا ہے ۔کیمپ میں موجود بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کے رہنماؤں نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ہماری کیمپ کا مقصد طلباء کے حقوق کے لیے ہے اور طلباء کے حقوق پر کبھی بھی اور کسی بھی صورت سمجھوتا نہیں کیاجائے گا ، اور نئی میڈیکل کالجز کی فعالیت تک ہماری کیمپ جاری رہے گی ۔رہنماؤں نے میڈیا بریفنگ میں کہا کہ بلوچستان حکومت کو اس حوالے سے اپنے آپ کو برالمہ سمجھتی ہے ۔حکومت نے پوائنٹ اسکورنگ کی خاطر نئے میڈیکل کالجز کا اعلان تو کیا گیا کہ جب عملی طور پر کچھ کرنے کا وقت آیا تو حکومت بے بس ہو کر کنارہ کش ہوچکی ہے ،نئے میڈیکل کالجز کی فعالیت پورے بلوچستان کے لئے فائدہ مند ثابت ہوگی ،اور کالجز کی فعالیت تک ہماری جہد جہد جاری رہے گی ۔آج بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کی جانب لگائے جانے والی کیمپ میں بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما ڈاکٹر ناشناس لہڑی ،نیشنل پارٹی کوئٹہ وحدت کے سعید بلوچ ،بی ایس او کے مرکزی سیکرٹری جنرل حمید بلوچ،بلوچ اسٹوڈنٹس ایکشن کمیٹی کے زونل صدر شاہزیب بلوچ، بلوچ ڈاکٹرز فورم کے مرکزی رہنماؤں، پیپلزپارٹی ڈسٹرکٹ کوئٹہ کے عہداران ،اورانصاف اسٹوڈنٹ فیڈریشن کے رہنما سمیت دیگر سماجی اور سیاسی شخصیات نے کیمپ کا دورہ کر کے طلبا ء کے ساتھ اظہار یکجہتی کی ہے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker