لاپتہ بلوچ اسیران شہداء کے بھوک ہڑتالی کیمپ کو 2378دن ہوگئے

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز) لاپتہ بلوچ اسیران شہداء کے بھوک ہڑتالی کیمپ کو 2378دن ہوگئے اظہار یکجہتی کرنے ولوں میں خضدار سے لاپتہ ، شہدا کی والدہ نے لاپتہ افراد شہداء کے لواحقین سے اپنے خیالات کا اظہار یوں کی کہ ذاکر مجید کبیر بلوچ مشتاق بلوچ عطاء اللہ بلوچ سمیت دیگر ہزاروں بلوچ ریاستی ایجنسیوں کے عقوبت خانوں میں تشدد سہ رہی ہے ۔ مفر اٖسوس کے ساتھ کہناپڑتا ہے کہ دنیا خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہی ہے ۔ مذہب دنیا کو انسان دوستی کی بنیاد پر ریاست کے ظالم کے خلاف آواز بلند کر یں۔ بلوچستان میں انسانی حقوق کی پامالی ہور ہی ہے ۔ انسانی حقوق کے اداروں کا فرض بنتا ہے کہ وہ انسان حقوق کے حق میں آواز بلند کریں بلوچستان میں غیر قانونی طورپر اغوا ء ہونے والوں کو بازیاب کروائیں ہم ریاست اور ان کے اداروں پر بھروسہ نہیں کرتے ہیں۔ کیونکہ دشمن سے رحم کی اپیل کرنا عقل جمیل سے بالا تر ہے ۔ جو ہمیں مار رہے ہیں وہ کیسے ہمیں انصاف دے گا۔ ہم دنیا مہذب ملکوں اور انسانی حقوق کے اداروں سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ بلوچ کی آواز سنہیں بلوچستانمیں انسانی حقوق کی پامالیوں کانوٹس لیں۔ یہ بات وائس فار مسنگ پرسنز کے وائس چیئرمین ماما قدیر بلوچ نے وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہی ۔ انہوں نے کہاکہ ہم اقوم متحدہ سے اپیہ کرتے ہیں کہ وہ بلوچ اسیران کی بازیابی میں اپنا کردار ادار کریں ہمارے سیاسی و رکروں کو جنگی قیدی کا درجہ دیں۔ بلوچستان میں ظلم کرنے والوں اور انسانی حقوق کی پامالی کرنے والے فورسز کو عالمی عدالت میں لے جائیں جہاں پر انہیں عالمی قوامین کے مطابق سزا دیں۔ اور ریاستی فورسز خفیہ اداروں پر پابندی عائد کریں۔ مہذہب دنیا کی اس طرح کی خاموشی پوری انسانیت کے لئے خطرکے کی گھنٹی ہے اگر دنیا نے اس طرح خاموشی اختیار کی تو دنیا انتشار انارکی اور تباہی کی طرف جائے گا۔ جس کا ذمہ دار مذہب دنیا اور انسانی دوست ادارے ہونگے اگر اقوام متحدہ شام اور افغانستان تیونس لبیاں مصر اور یمن میں مداخلت کر سکتے ہیں تو پھر بلوچستان میں کیوں نہیں۔ کیا بلوچ انسان نہیں کیا بلوچ میں ریاستی کی بربیت اپنی انتہا کو نہیں پہنچی ۔ ہم مہذب دنیا سے امید کرتے ہیں کہ وہ مظلوم بلوچ کی آواز سنہیں گے اور ریاست کی انسانیت سے عادی اقدامات کا نوٹس لیں گے جو ظلم کرتا ہے ۔ مزہب دنیا کا فرض بنتا ہے ۔ کہ اس کے خلاف اقدامات اٹھائیں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close