بلوچستان: ایک ہفتے میں ریل گاڈیوں پر تین حملے، صوبے میں کوئی نوگو ایریا نہیں،کمانڈر سدرن کمانڈ

کوئٹہ( ریپبلکن نیوز) کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ بلوچستان کے حالات تبدیل ہورہے ہیں اور اب صوبے میں کوئی نوگو ایریا نہیں.کوئٹہ میں معدنی ترقی سے متعلق سیمینار سے خطاب کے دوران لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ کا کہنا تھا کہ بلوچستان کو گزشتہ 10 سال سے دہشت گردی کا سامنا رہا لیکن اب حالات تبدیل ہورہے

بلوچستان میں امن قائم ہوچکا اب ترقی کے سفر کا آغاز کرنے جارہے ہیں ،اس طرح کی نشستیں ہمیں سرمایہ کاری کی جانب لے جاسکتی ہیں. لاہور اور اسلام آباد کے بعد جلد کوئٹہ میں سیف سٹی پروجیکٹ پر کام شروع ہوگا، کوئٹہ کے بعد گوادر اور حب کو سیف سٹی بنائیں گے.ہم صوبائی حکومت کو ہر ممکن تعاون فراہم کریں گے.

کمانڈر سدرن کمانڈ کا کہنا تھا کہ سرحدوں کی حفاظت ناگزیر ہے جو معاشی ترقی اور امن کی بحالی میں معاون ثابت ہوگا، اب تک ہم سرحد پر 370 کلو میٹر باڑ لگا چکے ہیں، اگلے ماہ پر سرحد پر مزید باڑ لگانے کا کام ہوگا، ایران کے ساتھ بارڈر پر باڑ کی تعمیر کا آغاز کر رہے ہیں.لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے کہا کہ بلوچستان کے قدرتی وسائل سے اب تک فائدہ نہیں اٹھایا گیا، ماضی میں انفرااسٹرکچر پالیسی اور شفافیت کے فقدان کا سامنا رہا،

معدنی شعبے میں بہت مواقع ہیں اس سے فائدہ اٹھانا ہوگا، بہتر سیکیورٹی اور جدید مائننگ سے اس شعبے کو ترقی دی جاسکتی ہے، مائننگ کمپنیاں آئیں انہیں مکمل تحفظ فراہم کیا جائے گا، مقامی کان مالکان کی سیکورٹی کے مسائل بھی حل کریں گے. واضح رہے کہ کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ ڈی جی آئی ایس پی آر رہ چکے ہیں .

یاد رہے کہ فوج نے ان دعوں کے برعکس بلوچستان میں مسلح مزاحمت کاروں کی کاروائیوں میں بہت شدت آئی ہے گزشتہ ایک ہفتے کے دوران ںصیر آباد، ڈیرہ مراد جمالی اور راجن پور کے علاقے روجھان مزاری میں ریل گاڈیوں پر تین حملے ہوچکے ہیں جن میں تین فوجی اہلکاروں سمیت دس افراد ہلاک ہوگئے ہیں جبکہ ڈیرہ بگٹی میں متعدد گیس پائپ لائینوں کو اڑایا گیا ہے۔

اس کے علاوہ ڈیرہ بگٹی، سبی، آواران، ںصیر آباد سمیت کیچ کے مخلتف علاقوں میں فورسز کے اہلکاروں پر متعدد حملے ہوچکے ہیں جس میں کئی اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے ہیں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button