پاکستان دنیا کو گمراہ کر رہی ہے، طالبان قیادت پاکستان میں ہی موجود ہے۔ عبداللہ عبداللہ

نیوز ڈیسک(ریپبلکن نیوز) افغانستان کے چیف ایکز یکیٹو عبداللہ عبداللہ نے کہا کہ اکثر طالبان پاکستان میں ہی مقیم ہیں ۔ اور پاکستان کی حکومت یہ تاثر دینا چاہتی ہے کہ اس انتہا پسند تنظیم کے رہنما شورش زدہ ملک میں ہی ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے طالبان رہنماؤں کی ایک میٹنگ کل پاکستان میں طلب کی ان میں روس افغانستان اور چین بھی شمولیت کرے گا۔ اس میں امریکی صدر کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد بھی شامل ہوں گے۔

طالبان نےکہا کہ ان کا وفدوز یراعظم عمران خان سے بھی ملاقات کرے گا۔ لیکن عبداللہ عبداللہ نے کہا کہ پاکستان یہ تاثردینا چاہتاہے کہ طالبان کےساتھ ان کا برائے راست سے تعاون نہیں ہے۔ اور وہ صرف افغان مہاجروں کے مسلے پر ان کے ساتھ بات کرنا چاہتے ہیں۔

عبداللہ نے کہا کہ طالبان کا شوری پاکستان میں ہی موجود ہے اور جب بھی پاکستانی حکومت چاہے وہ انہیں بات چیت کےلیے بلاسکیں گے۔ پاکستانی حکومت عالمی برادری کے آنکھوں میں دھول جھونک رہی ہیں۔ اور یہ کہناچاہتی ہے کہ انہیں طالبان کے ساتھ کوئی سروکار نہیں ہے۔ لیکن یہ سراسرجھوٹ ہے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Back to top button