ڈیرہ بگٹی و نصیر آباد میں شدید فوجی آپریشن جاری، مسلح مزاحمت کاروں اور فوج کے درمیان خونریز جھڑپیں

ڈیرہ بگٹی (ریپبلکن نیوز) ڈیرہ بگٹی و نصیر آباد کے مخلتف علاقوں میں فوجی آپریشن جاری، مسلح مزاحمت کاروں اور فوج جگ درمیان شدید لڑائی کی اطلاعات 

آمدہ اطلاعات کے مطابق ڈیرہ بگٹی کے سنگسیلا، مڑوار، گوڑی، ساڑت آف، چغیڑدی جبکہ نصیر آباد کے علاقے چھتر پلے جی اور گرد و نواح میں شدید فوجی آپریشن جاری ہے 

مزکورہ علاقوں میں ہزاروں کی نفری نے تمام دیہاتوں کو محاصرے میں لے رکھا ہے جبکہ فضائی مدد کیلئے اہلکاروں کو گن شپ ہیلی کاپٹروں کی مدد بھی حاصل ہے۔ 

ہیلی کاپٹر مسلسل شیلنگ کررہے ہیں جس کی وجہ سے جانی نقصانات کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے تاہم فوجی محاصرے کی وجہ سے رابطے نہ ہونے کے سبب تفصیلات معلوم نہیں ہوسکی ہے۔ 

جبکہ دوسری طرف ساڑت آف، گوڑی اور چھتر پلے جی کی علاقوں میں بلوچ مزاحمت کاروں اور فوج کے درمیان خونریز جھڑپوں کی بھی اطلاعات موصول ہوئی ہے۔ 

علاقائی زرائع کا کہنا ہے کہ جن علاقوں میں جھڑپیں ہورہی ہے وہاں گن شپ ہیلی کاپٹر شدید شیلنگ و گولہ باری کررہی ہیں جبکہ مزکورہ علاقوں کی طرف سے صبع سے شدید دھماکوں اور فائرنگ کی آوازیں آرہی ہیں۔ 

سوئی سے لیویز زرائع نے ریپبلکن نیوز کو بتایا ہے کہ ہیلی کاپٹروں کے زریعے چھ فوجی اہلکاروں کی لاشوں اور نو زخمی اہلکاروں کو پی پی ایل ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ 

مزید خبریں اسی بارے میں