بی ایل اے کے چند لوگ مجھے مخبر قرار دیکر زاتی دشمنی نکالناچاہتے ہیں۔اظہر بلوچ

کوہٹہ(ریپبلکن نیوز) اظہر بلوچ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ گزشتہ دنوں مسلح تنظیم بلوچ لبریشن آرمی کی جانب سے ایک بیان جاری کیا گیا گیا جس میں کہا گیاتھا کہ نجیب مولداد نے اعتراف کیا ہے کہ اظہر پل آباد میں فوج کے گاڑی میں سوار تھا اور جمی میں فوجی آپریشن کے لیے نشاندہی بھی اظہر نے کیا تھا جو سراسر جھوٹ ہے. نہ میں مخبر ہوں اور نہ میرا مخبروں سے لینا دینا ہے اور علاقے کےلوگ مجھے اچھی طرح سے جانتے ہیں کہ میرا ان سب چیزوں سے کوئی تعلق نہیں۔

ایک بات میں بلوچ لبریشن آرمی کے قیادت کے سامنے واضح کرنا چاہتا ہوں کہ بی ایل اے کے کمانڈر صدام کے والد نبی بخش کےساتھ میری زاتی دشمنی ہے. دو سال پہلے ہمارے خاندان کے چند لوگ خواتین کے ہمراہ پل آباد کے پہاڑی علاقے گزن میں لکڑیاں لانے کے غرض سے گئے تھے جہاں نبی بخش نےاپنے دو اور مسلح لوگوں کے ساتھ ہمارے بزرگوں اور خواتین پر گولیاں فائر کیے تھےاور ہمارے خاندان کے عورتوں اور بزرگوں پر تشدد بھی کیا گیا تھا. جب ہم نے ان سے دریافت کیا کہ ہم پر بغیر کسی جواز کے کیوں تشدد کیا گیا تو ہمیں مزیدبے عزت کیا گیا اور گالیاں دی گئی. اسی لیے زاتی دشمنی نکالنے کے لیے مجھ پر اور میرے خاندان کے دیگر افراد پر مخبری کا الزام لگایا گیا. جہاں بھی فوجی آپریشن کیا گیا اسکا الزام مجھ پر لگایا گیا. پورا علاقہ گواہ ہے کہ نجیب مولداد کے اغواء ہونے سے 3 ماہ قبل مجھ پر جمی آپریشن کا الزام لگایا گیا تھااور نبی بخش نے کہا تھا کہ اظہر کے گھر کے پاس ایف سی کے گاڑی آئے ہیں اور اظہر ان میں سوارہوکر جمی آپریشن کی نشاندہی کے لیے گیا تھا. لہذا میں بلوچ لبریشن آرمی کے مرکزی قیادت سے درخواست کرتا ہوں کہ مجھ پر اس طرح کےالزامات لگانے سے پہلے میرے بارے میں تحقیقات کی جائے، علاقے کے لوگوں سے پوچھا جائے کیونکہ نبی بخش زاتی دشمنی نکالتے ہوئے مجھ پر بے بنیاد الزامات لگاتا رہا ہے. بی ایل اے کے دوست جب بھی مجھے بلانا چاہیں میں آنے کے لیے اپنی بے گناہی ثابت کرنے کے لیے تیار ہوں. میں بی ایل اے سے درخواست کرتا ہوں کہ مجھے انصاف فراہم کیا جائے کیونکہ مخبر نہ ہوتے ہوئے بھی قوم کے سامنے مجھے غدار اور مخبر قرار دیا گیاہے جو سراسر ناانصافی ہے.مجھے  مخبر قرار دینے سے پہلے اگر تحقیقات ہوتی، مجھے بلاکر پوچھا جاتا یا علاقے کے لوگوں سے پوچھا جاتا تو بہتر تھا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close