پاکستانی فوج ہر طرح سے بلوچ قوم کو حراساں کرنے میں مصروف ہے۔ بی این ایم

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز)بلوچ نیشنل موومنٹ کے مرکزی ترجمان نے کہا کہ پاکستانی قبضہ گیر فوج ہر طرح سے بلوچ قوم کو حراساں کرنے اور نسل کشی میں مصروف ہے۔ کل ہوشاپ میں چھوٹے بچیوں کو تالاب میں پھینک کر جس بیدردی سے شہید کیا گیا وہ بربریت کی ایک بدترین مثال ہے۔اس قتل کے بعد جس طرح بچیوں کی پکنک منانے کا ڈرامہ رچایا گیا وہ خود ایک ثبوت بن گیا ہے۔ پاکستان نے بلوچستان کو ایک کالونی بنانے کے بعد مظالم کی تمام حدیں پار کردی ہیں۔ قریب دو دہائیوں سے جاری پانچویں فوجی آپریشن میں ہزاروں بلوچوں کو قتل اور اغوا کرکے لاپتہ کیاگیا ہے۔ گمشدگیوں، مارو اور پھینکواورجعلی مقابلوں میں بلوچوں کو قتل کرنے کے بعد اب نسل کشی کو وسعت دیکر جس طرح سے ان بچیوں کو سفاکانہ طریقے سے پانی میں ڈبو کر شہید کیا گیا وہ دنیا کی آنکھیں کھولنے کیلئے کافی ہونی چاہئیں۔
ترجمان نے کہا کہ خضدار میں ایک ہفتے سے جاری آپریشن میں مختلف علاقوں میں فوج نے دھاوا بول کر چادر وچار دیواری کی پامالی کرتے ہوئے لوگوں کو تشدد کا نشانہ بنایا ہے۔ اسی طرح ایک مہینے سے جاری کولواہ کے مختلف علاقوں میں آپریشن کے دوران سو سے زائد افراد کو اُٹھاکر لاپتہ کیاگیا ہے اور کئی علاقے محاصرے میں ہیں، جس کی وجہ سے تفصیلات تک رسائی ممکن نہیں ہوپا رہی ہے۔ ڈنڈار اور شاپکول میں اسکولوں پر قبضہ کرکے فوجی چوکی بنائے گئے ہیں۔ تمپ اور دشت کئی مہینوں سے اسی صورتحال کا شکار ہیں جہاں روزانہ کسی نہ کسی گھر میں گھس کر قیمتی اشیا کو لوٹ کر گھروں کو جلایا جارہا ہے اور نہتے شہریوں کو فوجی کیمپوں میں منتقل کرکے اذیتیں دی جا رہی ہیں۔

 11

مزید خبریں اسی بارے میں

Close