بی ایل ایف نے مختلف حملوں کی ذمہ داری قبول کر لی

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز)بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے مختلف حملوں کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا کہ ہفتہ کے روز آواران میں آرمی کی ریکن چیک پوسٹ پر راکٹ حملہ کرکے قابض فوج کو بھاری جانی و مالی نقصان پہنچایا۔ ایک راکٹ قابض فوج کی چوکی پر قائم خیمہ پر گرا، جس سے خیمے میں موجود اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔ 14جولائی کو کیچ کے علاقے ہیرونک اور کرکی کے درمیان چین پاکستان اقتصادی راہداری پر کام کرنے والی عسکری تعمیراتی کمپنی فرنٹیر ورکس آرگنائزیشن (ایف ڈبلیو او) پر حملہ کرکے دو اہلکاروں کو ہلاک اور دو زخمی کئے ہیں۔ حملے میں ایک ٹریکٹر اور گاڑی کو شدید نقصان پہنچا کر ناکارہ بنا دیا۔ ترجمان نے کہا کہ 14 نومبر 2015 کو تربت کے علاقے سنگانی سر میں ریاستی خفیہ اداروں کے اہم کارندے امجد ولد رحمت کو فائرنگ کرکے ہلاک کیا۔ وہ راشد پٹھان کی سرپرستی میں کئی بلوچوں کی مخبری، اغوا و قتل میں ملوث تھا۔ اُس کابھائی نعیم اب بھی ریاستی اداروں کیلئے مخبری کا کام کرتا ہے، جو سرمچاروں کے ایک حملے میں زخمی ہوکر زندہ بچ گئے ہیں۔ چند خاص وجوہات کی بنا پر اُس وقت امجد کے ہلاکت کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی تھی۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close