نواب مہران مری کئی گھنٹوں سوئس امیگریشن کی حراست کے بعد رہا کردئیے گئے

جنیوا (ریپبلکن نیوز) بلوچ قوم پرست رہنما نوا ب مہران مری کو اہلخانہ کے ساتھ کئی گھنٹے حراست میں رکھنے کے بعد رہا کردیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ میں بلوچ قوم پر ہونے والے مظالم کے خلاف متحرک بلوچ رہنما نواب مہران مری کو  سوئیزرلینڈ حکومت نے کئی گھنٹے حراست میں رکھنے کے بعد رہا کردیا ہے۔ جس کے بعد وہ لندن روانہ ہوگئے ہیں یاد رہے کہ گزشتہ روز نواب مہران مری کو سوئٹزرلینڈ کے زیورخ ائیرپورٹ پر اس وقت حراست میں لیا تھا جب وہ اپنے اہلخانہ کے ساتھ وہاں پہنچے تھے ائیرپورٹ پر پینچتے ہیں انھہیں حراست میں لیا گیا تھا ان کے ہمرہ ان کی اہلیہ اور چار بچے بھی تھے سوئز حکام کے مطابق ان کو پاکستان کی طرف سے اٹھ صفحات پر مشتمل ایک ڈوسئیر دی گئی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ نواب مہران مری کے مسلح تنظیموں سے تعلقات ہیں جبکہ نواب مہران مری نے ان الزامات کو ماننے سے انکار کرتے ہوئے مسترد کردیا۔ زرائع کے مطابق نواب مہران مری اپنی اور لاگو پابندی کے خلاف اپنے وکلا سے مشورے کے بعد عدالت سے رجوع کرینگے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close