سوئس حکام کی جانب سے مہران مری کو ملک میں داخل ہونے سے روکنا پریشان کن ہے۔ نواب براہمدغ بگٹی

نیوزڈیسک(ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن پارٹی کے صدر اور قومی رہنماء نواب براہمدغ بگٹی نے کہا ہے کہ سوئس حکام کی جانب سے نواب مہران مری کو ملک میں داخل ہونے سے روکنا پریشان کن ہے۔

نواب براہمدغ بگٹی نے ان خیالات کا اظہار سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری کردہ اپنے پیغامات میں کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ یہ حیران کن بات ہے کہ سوئٹزرلینڈ کے حکام نے نواب مہران مری کو زیورخ ائیرپورٹ سے حراست میں لینے کے بعدملک میں داخل ہونے سے روک دیا ہے اور دس سال کے لیے سویٹزرلینڈ میں داخلے پر پابندی عائد کردی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ایک غیر جانبدار ملک کیسے اس طرح کر سکتا ہے۔

نواب براہمدغ بگٹی نے مزید کہا ہے اگر سوئٹزرلینڈ یا کسی اور مغربی ملک کو ہماری سیاسی سرگرمیوں پر شک یا اعتراض ہے تو میں سب کو دعوت دیتا ہوں کہ آئیں اور ہمیں دیکھے کہ ہم کیا کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم خود چاہتے ہیں کہ سب کو پتہ چلے کہ ہم کیا کر رہے ہیں۔ جبکہ بی آر ایس اور کے چرمین ریحان بلوچ اور بی این ایم کے چیئرمین خلیل بلوچ نے بھی نواب  مہران مری کو حراست میں لیئے جانے اور سوئیزرلینڈ میں داخلے پر پابندیوں کی مزمت کی ہے۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close