قائد تحریک حیر بیار مری کے خلاف ہرزہ سرائی اور الزام تراشیوں کو مسترد کرتےہیں.بلوچ سالویشن فرنٹ

BSFکوئٹہ (ریپبلکن نیوز) بلوچ وطن موومنٹ بلوچستان انڈیپینڈنس موومنٹ اور بلوچ گہار موومنٹ پر مشتمل الائنس بلوچ سالویشن فرنٹ کے مرکزی ترجمان نے اپنے جاری کئے گئے بیان میں قدیر بلوچ کی جانب سے حالیہ ویڈیو پیغام میں قائد تحریک حیر بیار مری کے خلاف ہرزہ سرائی اور الزام تراشیوں کو مسترد کرتے ہوئے انہیں گمراہ کن قرار دیاترجمان نے کہاکہ موصوف قدیر بلوچ ریاست کی زبان بول رہے ہیں اس میں دورائے نہیں کہ موصوف باقائدہ اور منظم انداز میں میر حیر بیار مری کے خلاف نہ صرف ریاستی ایجنڈاکا حصہ بن چکے ہیں بلکہ موصوف کو ان گروپس کی بھی آشیر باد حاصل ہے جوا س سے قبل میر حیر بیار مری پر ملٹی نیشنل کمپنیوں کے ساتھ سودا بازی کا الزام لگائے تھے موصوف کے غیر زمہ دارانہ اور جھوٹ پر مبنی ویڈیو پیغام کو سنگر پبلی کیشن کی جانب سے سنسنی خیز بناکر اچھالنے کی بھر پور کوششوں سے معلوم ہوتا ہے کہ اس سکرپٹ میں ریاست کے ساتھ ساتھ اور کونسے ہاتھ شامل ہیں جنہیں عالمی وعلاقائی سطح پر حیر بیارمری کی بے باک اور ایماندارانہ جدوجہد ہضم نہیں ہورہی ہے اور حیر بیار مری کی رہنمایانہ صلاحتیوں اور کاوشوں سے ان پر سکتہ طاری ہوگیا ہے ترجمان نے کہاکہ موصوف کایہ دعوی بھی جھوٹ پر مبنی ہے کہ انہیں بلوچ قومی تحریک کے ایک معتبر ہستی خیر بخش مری نے کوئی پیغام دیا ہے بلکہ موصوف اپنی زہنی اختراع کو خیر بخش مری سے منسوب کرکے دوہرے جھوٹ کا مظاہرہ کرتے ہوئے بالاچ مری سمیت بعض شہداء کے شہادت کے واقعات کے پس منظر کو قائد تحریک حیر بیار مری سے جوڑنے کی کوشش کرتے ہوئے زمینی حقائق کو جھٹلانے کی کوشش کی ہے ترجمان نے کہاکہ بلوچ رہنماء حیر بیار مری کے خلاف موصوف نے جو زبان استعمال کئے ہیں اور جس قسم کے من گھڑت الزامات لگادیئے ہیں اس سے حیر بیار مری کے غیر معمولی اور مثالی کردار پر کوئی فرق نہیں پڑے گا بلکہ بلوچ عوام میں موصوف کے اپنے مسلسل متنازعہ اور مشکوک کردارسے پردہ اٹھ چکاہے بلوچ عوام میں لاپتہ بلوچ اسیران کی جدوجہد کے حوالہ سے ان کا جو قد مقام اور احترام تھا موصوف حالیہ سازشی ویڈیو پیغام کے بعد اپنا وہ مقام اور احترام کھوچکاہے اگرپچھلے دو دہائیوں سے حیر بیار مری کی جدوجہد آزادی میں کردار کا ایمانداری کے ساتھ تجزیہ کیا جائے تو دو دہائیوں کے اس تاریخی میزان میں حیر بیار مری کا کردار فہم فراست لائحہ عمل حکمت عملی سیاسی و سفارتی کوششوں کا پلڑا بھاری دکھائی دیگا ایک عام آدمی جو اگر آزادی کے جدوجہد سے رتی بھر آگاہ ہے تو وہ یقیناًحیر بیار مری کے غیر معمولی کردار کا معترف ہوئے بغیر نہ رہ سکے گا کیونکہ بلوچ عوام حیر بیار مری کی بلوچ آزادی کی جدوجہد میں کلیدی کردار سے آگاہ ہے اوراس کا اعتراف خود خیر بخش مری نے متعدد بار کی ہے لیکن افسوس ناک امر یہ ہے کہ موصوف اپنی نا اہلی اور ناکامی چھپانے کی کوشش میں اپنا سارا غصہ حیر بیار مری کے خلاف کردار کشی اور الزام تراشی کی صورت میں نکال کر بلوچ عوام کے آنکھوں میں دھول جھونکنے کی کوشش کرتے ہوئے بعینی ریاست اکے ترجمانی کی ہے ترجمان نے کہاکہ موصوف کو امریکن کمیونٹی اور بعض عالمی اداروں کی جانب سے نظر انداز کرنے کی اصل وجہ ان کی اپنی متنازعہ کردار بنی اس میں کوئی اور قصور وار نہیں بلکہ ان کی نا اہلی اور غیر سنجیدگی کے حوالہ سے عالمی کمیونٹی نے انہیں مسترد کرتے ہوئے ان سے ہاتھ کھینچ لیاترجمان نے کہاکہ موصوف کا بلوچ جہد آزادی میں ماضی میں کوئی کردار نہیں بلکہ وہ اتفاقی اور حادثاتی طور لاپتہ بلوچ اسیران کے بازیابی کے تحریک میں شامل ہواجب کہ ان کے بیٹے شہید جلیل ریکی کو لاپتہ کرکے بعد ازان شہید کیا گیا تو موصوف قدیر بلوچ باقائدہ بلوچ اسیران کی بازیابی کے لئے آواز اٹھانے والے تنظیم کا حصہ بن گئی شہید جلیل ریکی کی شہادت اور ان کا بلوچ جہد آزادی میں کردار لاکھ قابل احترام ہے جبکہ قدیر بلوچ کو ایک شہید کے باپ ہونے کے ناطے بلوچ قوم نے بہت زیادہ احترام دیا لیکن وہ اس احترام اور قدر کو لے کر ہیروازم اور نرگسیت سے ہاتھ صاف کرکے خود کوبلوچ قومی تحریک کا امام سمجھتے ہوئے تحریک کے بانی کرداروں کے خلاف بیک وقت ریاستی اور ردانقلابی قوتوں کے پروپیگنڈہ مشینری کی حصہ بن گئے ترجمان نے کہاکہ نواب مری نے موصوف سمیت کسی کو بھی اس طرح کا پیغام یا وصیت نامہ حوالہ نہیں کیا ہے خیر بخش مری ایک معتبر زمہ دار اور عہد ساز شخصیت تھے جو جہد آزادی میں مختلف امتحانات اور مصائب کا سامنا کیاوہ آزادی جیسے عظیم مقصدیت میں اپنی فیملی سمیت کچھ داؤ پر لگایاجن کے قول و فعل میں کوئی تضاد نہیں تھا وہ اپنی الفاظ تول کر بیان کرتے وہ بھول سے بھی اس طرح کے الفاظ استعمال نہیں کرتے جو کہ موصوف نے ان کے ساتھ منسوب کیاہے وہ ایک مثالیت پسند انسان تھاوہ لاکھوں بلوچوں کے دلوں میں عقیدت کی حد تک جگہ پاچکے ہیں ان کے کٹر مخالفیں بھی ان سے اس طرح کے باتیں منسوب کرنے سے پہلے ہزار بار سوچتے ہیں لیکن قدیر بلوچ بلا سوچھے سمجھے ان سے من گھڑت باتیں منسوب کرکے اپنے اوراپنی پیشرووں کی رو سیاہ کررہی ہے ترجمان نے کہاکہ تحریکوں میں جان و مال کی قربانی عین سعادت ہے یہ تحریکوں میں لازمی اور ناگزیر ہوتے ہیں شہید بالاچ سمیت ہزاروں بلوچ فرزندوں کے شہادت کے واقعات جدوجہد آزاد ی سے جڑی ہوئی ہے تر جمان نے کہاکہ شہید بالاچ کی شہادت اور نواب مری کے پیغام بارے موصوف کے من گھڑت دعوی کو شہیدبا لاچ مری کے فیملی نے جھوٹ پر مبنی قرار دیتے ہوئے اس طرح کے بے معنی پروپیگنڈوں کی مذمت کی ہے جو کہ لائق خیر مقدم ہے بی ایس ایف اس سلسلے میں شہید بالاچ مری کے زوجہ اور میرجاوید مینگل کے اخباری پریس ریلیز کاخیر مقدم کرتاہے جو موصوف قدیر بلوچ کے جھوٹ پر مبنی ویڈیو پیغام کو شرمندہ کرنے کے لئے کافی ہے

 

مزید خبریں اسی بارے میں

Close