پسنی جیونی اور گڈانی میں پانی کے منصوبوں میں کرپشن پر نیب نے نوٹس لے لیا

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز) پاکستان کے قومی احتساب بیورو(نیب) نے بلوچستان کے ساحلی علاقوں پسنی، جیونی  اور گڈانی میں صاف پانی کے تین  واٹر ڈی سیلینیشن پلانٹس  میں کرپشن کا نوٹس لے لیا۔ بلوچستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی اور دیگر متعلقہ حکام کو نوٹسز جاری کردیئے گئے۔

ترجمان نیب بلوچستان کے مطابق بلوچستان ڈویلپمنٹ اتھارٹی(بی ڈی اے ) نے ایک ارب سے زائد کی لاگت سے جیونی، پسنی اور ڈام جٹی میں پینے کے صاف پانی کے تین الگ الگ منصوبے شروع کئے  جو 12سال گزرجانے کے بعد بھی غیر فعال ہیں ۔جبکہ کارواٹ میں دو ملین گیلن پانی روزانہ فراہمی کا سوا ارب روپے کا ایک اور منصوبہ بھی گوادر کی عوام کو چند دن پانی کی فراہمی کے بعد ناکارہ ہو چکا ہے۔

ڈی جی نیب بلوچستان مرزا محمد عرفان بیگ نے بلوچستان کے ساحلی علاقےکے لوگوں کو پانی کی عدم دستیابی، مبینہ کرپشن کے ذریعے قومی خزانے کو ناقابل تلافی نقصان کا نوٹس لیتے ہوئے فوری اقدامات کے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔ڈی جی نیب نے پانی کی قلت کی گھمبیر صورتحال کے پیش نظر ڈی سیلینیشن پلانٹ کے منصوبوں کی تحقیقات میں تیزی لانے کی ہدایت جاری کر دیں۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close