حوثی باغی منحرف علی صالح کو قتل کرسکتے ہیں: نائب صدر

یمن(ریپبلکن نیوز) یمن کے نائب صدر جنرل علی محسن الاحمر نے منگل کو اپنے ایک بیان میں خبردار کیا ہے کہ ایران نواز حوثی باغی سابق منحرف صدر علی عبداللہ صالح کو قتل کرسکتے ہیں۔

شمالی یمن کی مآرب گورنری میں مقامی قیادت کے ایک اجلاس سے خطاب میں نائب صدر جنرل علی محسن الاحمر نے کہا کہ آئینی حکومت کا تختہ الٹنے اور حوثی باغیوں کو ملک کے کئی شہروں پر قبضہ کرانے میں علی صالح نے بھی ان کی مدد کی۔ علی صالح کی بھرپور مادی اور معنوی مدد کے بعد ہی حوثی باغی ملک کے اداروں اور شہروں پر قبضہ کرنے میں کامیاب ہوئے تھے۔

نائب صدر کا کہنا تھا کہ جنہیں علی صالح ’سیاہ لکیر‘ قرار دیتے تھے ان انہیں عبورکرنے میں علی صالح نے حوثیوں کی مدد کی۔ ملک کا نظام درہم برہم کرنے، ریاستی اداروں پر ایران نواز گروپ کا قبضہ کرانے اور دیگر جرائم میں مدد کرنے کے باوجود حوثی علی صالح سے خوش نہیں ہوئے۔ وہ آج ان کی جان لینے کے در پے ہیں۔

علی محسن الاحمر نے کہا کہ حوثی بد عہد ہیں اور وہ کسی بھی وقت علی صالح کو قتل کرسکتے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ آج اگر حوثی صنعاء پر قابض ہیں تو وہاں تک پہنچانے میں انہیں علی صالح کی معاونت کا بھی کلیدی کردار ہے۔

خیال رہے کہ یمن کے نائب صدر کی جانب سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب حالیہ برسوں کے دوران آئینی حکومت کے خلاف مل کر لڑنے والے حوثی باغیوں اور سابق منحرف صدر علی عبداللہ صالح کے درمیان شدید اختلافات ہیں۔ دونوں گروپوں میں متعدد بار تصادم کی کیفیت بھیی پیدا ہوچکی ہے۔ حوثی اور علی صالح گروپ کے رہ نما ایک دوسرے سے بدعہدی اور ایک دوسرے کے خلاف سازشوں کا الزام عاید کرتے ہیں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close