ڈونلڈ ٹرمپ کا آرلینڈو حملے کو اسلامی شدت پسندی سے نہ جوڑنے پربراک اوباما سے استعفے کا مطالبہ

Trumpواشنگٹن(ریپبلکن نیوز)  غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق آرلینڈو میں ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب پر حملے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ امریکی سرزمین پر نائن الیون کے بعد یہ سب سے بڑا حملہ ہے اور میری تمام تر ہمدردی متاثرہ افراد اور ان کے خاندان کے ساتھ ہے جب کہ امریکی صدر کی جانب سے آرلینڈو حملے کو اسلامی شدت پسندی سے نہ جوڑنا افسوس ناک ہے جس پر وہ استعفیٰ دیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن بھی اگر حملے کو اسلامی شدت پسندی نہیں کہتیں تو انہیں بھی فوری طور پر صدارتی دوڑ سے علیحدگی کا اعلان کردینا چاہیئے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ اسلامی شدت پسندی کے حامی خواتین، ہم جنس پرستوں، یہودیوں، عیسائیوں اور امریکی عوام کے مخالف ہیں اورمیں امریکا کا صدر بننے کے بعد شدت پسندوں سے انہیں تحفظ فراہم کروں گا، ہم امریکا کو ایک مرتبہ پھر اس کا کھویا ہوا مقام دلائیں گے۔ انہوں نے صدر اوباما کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکمران کمزور ہیں جن کی موجودگی میں حالات دن بدن ابتر ہوتے جارہے ہیں، اگر ان حالات میں سخت اور حکمت پر مبنی فیصلے نہ کئے تو امریکا صفحہ ہستی سے مٹ جائے گا۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close