دشت سے دو بلوچ فرزند بازیاب، پنجگور سے قابض فوج کے ہاتھوں چار مزید اغوا

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز) بلوچستان کے ضلع کیچ کے تحصیل دشت سے قابض پاکستانی آرمی اور خفیہ اداروں کے قید سے دو بلوچ فرزند بازیاب ہوکر اپنے گھروں کو پہنچ گئے ہیں۔ جبکہ ضلع پنجگورسے قبضہ گیر فورسز نے چار افراد کو غیر قانونی طورپر حراست میں لینے کے بعد لاپتہ کردیا ہے۔

ریپبلکن نیوز کو موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق تحصیل دشت سے 8 فروری کو قبضہ گیر پاکستانی فورسز اور خفیہ اداروں کے اہلکاروں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے دو افراد بازیاب ہوکر اپنے گھروں کو پہنچ گئے ہیں۔

دونوں افراد کی شناخت واھگ ولد محمد اور یعقوب ولد ملا سبزل سے ہوگئی ہے۔

دوسری جانب کل سے پاکستانی خفیہ اداروں اور فورسز کے اہلکاروں نے ضلع پنجگور کے علاقے پروم سے تین افراد کو اغوا کیا ہے۔ کل پنجگور کے علاقے پروم سے پاکستانی فورسز نے اکرم ولد قدیر نامی شخص کو حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔ جو گواش کا رہائشی ہے۔

جبکہ آج پروم کے علاقے جائین سے قبضہ گیر پاکستانی فورسز نے پندرہ سالہ ادریس ولد صدیق نامی شخص کو غیر قانونی طورپر حراست میں لینے کے بعد لاپتہ کردیا ہے۔  ادریس پروم کے علاقے جائین کا رہائشی بتایا جاتا ہے۔

پروم میں ہی ایک اور کاروائی میں فورسز کے اہلکاروں نے کلشان کے علاقے میں ایک گھر پر چھاپہ مارتے ہوئے نواب ولد غلام حسین نامی نوجوان کو اغوا کرلیا۔

پنجگور کے ہی علاقے گچک میں مسلح افراد نے سراج نامی شخص بندوک کی زور پر حراست میں لیتے ہوئے اپنے ساتھ لے گئے۔ زرائع کا کہنا ہے کہ سراج اپنے دکان پر بیٹھا تھا گاڑی میں سوار مسلح افراد نے آکر انہیں بندوک کی زور پر زبردستی اپنے ساتھ لے گئے۔

 

 
متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

error: ! جملہ حقوق محفوظ ہے
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker