فری بلوچستان مہم کی وجہ سے بین القوامی کمیونٹی کو آگاہی مل رہی ہے۔ مہران مری

لندن(ریپبلکن نیوز) بلوچ آزادی پسند رہنما مہران مری نے کہا ہے کہ فری بلوچستان مہم کی وجہ دنیا کو بلوچستان میں جاری انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کے بارے میں آگاہی مل رہی ہے۔

مہران مری نے یوٹیوب پر جاری اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کہا ہےکہ فری بلوچستان مہم بہت ہی زیادہ فائدہ مند ثابت ہوا ہے۔ اس مہم کی وجہ سے بین القوامی کمیونٹی کو بلوچستان میں جاری ریاستی جارحیت کے بارے میں آگاہی ملی ہے اور پاکستان کا نام دہشتگردوں کی معاونت کرنے والے ممالک میں شامل ہوا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ پاکستانی ریاست نہ صرف بلوچوں کی نسل کشی کر رہی ہے بلکہ بلوچستان کے وسائل کو لوٹتے ہوئے بلوچوں کا مالی استحصال بھی کر رہی ہے۔

نواب مہران مری اقوامِ متحدہ میں بلوچوں کی نسل کشی اور بلوچستان میں جاری فوجی آپریشنوں میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں، بلوچوں کی جبری گمشدگیوں اور ماورائے عدالت ہلاکتوں پر بولتے رہے ہیں۔ لیکن نومبر 2017 کو سوئس حکام نے چین اور پاکستان کے کہنے پر انکی سویٹرزلینڈ پر داخلے پر دس سالہ پابندی عائد کردی ہے۔ جس کی وجہ سے اب وہ جنیوا میں ہونے والے سرگرمیوں میں برائے راست خود حصہ نہیں لے سکتے ۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close