بی آر پی کا میونخ سیکورٹی کانفرنس کے دوران آگاہی مہم چلانے کا علان

نیوز ڈیسک (ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن پارٹی کی جانب سے میونخ سیکورٹی کانفرنس کے دوران اگاہی مہم چلانے کا علان، بی آر پی کی جانب سے سوشل میڈیا پر جاری ایک علامیہ میں کہا گیا ہے کہ بی آر پی سترہ فروری کو جرمنی کے شہر میونخ میں ایک احتجاجی ریلی نکالے گی اور ساتھ میں احتجاجی مظاہرہ بھی کیا جائے گا، یاد رہے کہ میونخ سیکورٹی کانفرنس پاکستان سمیت ستر ممالک کے علی سطح کے وفود شریک ہورہے ہیں جہاں پر عالمی سیکورٹی اور ان سے نمٹنے کے حوالے سے بات کی جائے گی۔ بی آر پی جرمنی کے صدر جواد بلوچ نے ریپبلکن نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ مظاہرے کا مقصد اس بڑے موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے دنیا کو آگاہ کرنا ہے کہ پاکستان خود ہی دنیا بھر کے دہشت گردوں کیلئے جنت کی حثیت رکھتا ہے اور وہ وہاں پر آرام سے بیٹھے ہیں اور ریاست کی جانب سے ان کو بھر پور معاونت فراہم کی جارہی ہے

انھونے مزید کہا گیا ہے کہ بلوچ قوم کی نسل کشی میں پاکستان فوج اپنے ساتھ ان مزہبی دہشت گرد گرہوں کا بھی استعال کرررہی ہے جو بلوچوں کی نسل کشی کررہے ہیں اور مستقبل قریب میں اس خطے کے تمام ممالک کیلئے خطرے کی علامت ہیں ان کا کہنا تھا کہ وہ جرمنی میں مقیم تمام بلوچوں سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اس مظاہرے اور ریلی میں شرکت کو یقینی بنائے تاکہ دنیا کو پیغام دیا جا سکے کہ بلوچ اس دہشت گرد ریاست کے خلاف متحد ہیں۔

جواد بلوچ نے کہا کہ بلوچ اس خطے میں سب سے زیادہ قتل و غارت گری کا شکار رہی ہے اور پاکستان فوج دنیا سے دہشت گردی کے نام پر امداد لیکر انھی دہشت گردوں کو دنیا کو بلیک میل کرنے کیلئے مزید توانا کرنے پر اور بلوچ قوم کی نسل کشی پر استعمال کرتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ بلوچ ایک سیکولر قوم ہے اور ہم خطے میں یورپ کے natural allies ہیں لہزا یورپ کا فرض بنتا ہے کہ وہ بلوچ قوم کو اس خطے کی دہشت گرد ریاست سے نجات دلانے کیلئے مدد فراہم کریں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close