عاصمہ جہانگیر مظلوم اقوام کی آواز تھیں جس کی ناگہانی موت سے ایک خلا پیدا ہوگئی ہے۔ چیئرمین ریحان بلوچ

مرحمہ عاصمہ جہانگیر نے اپنے عمل سے خود کو ایک سچا انسان دوست ثابت کیا

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے مر کزی چیئرمین ریحان بلوچ نے انسانی حقوق کی معروف کارکن عاصمہ جہانگیر کی ناگہانی موت پر رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرحومہ کی ناگہانی موت سے ایک خلا پیدا ہوگئی ہے۔

ریحان بلوچ نے کہا ہے کہ مرحومہ عاصمہ جہانگیر ایک زندہ ضمیر، روشن خیال با ہمت اور نڈر خاتون تھیں جس نے مظلوم اقوام پر ہونے والے مظالم کے خلاف بے خوف ہوکر ہر فارم پر آواز بلند کرتے ہوئے حقیقی انسانی حقوق کے علمبردار ہونے کا ثبوت دیا اور ریاستی مظالم کے خلاف آواز بلند کرتے ہوئے ہر وقت ثابت قدم رھیں۔

مرحومہ نے بلوچستان میں ہونے والے ریاستی فورسز کی جارحیت اور بلوچوں کی ماورائے عدالت گرفتاریوں اور شہادتوں کے خلاف عملی طورپر اقدامات کرتے ہوئے ریاستی خفیہ اداروں اور فورسز کو ان تمام کا زمہ دار ٹہراتے ہوئے سچے انسان دوست اور انسانی حقوق کی کارکن ہونے کا فرض ادا کیا۔

ریحان بلوچ نے مزید کہا پاکستان میں بہت کم ایسے لوگ پائے جاتے ہیں جو بے خوف و ڈر ہوکرحق کی بات کرنے سے نہ کتراتے ہوں۔ اور بلوچستان کا مسئلہ ایسا ہے کہ جس پر بات کرنے سے پاکستان کے تمام روشن خیال اور انسانی حقوق کے کارکنان  کتراتے ہیں جبکہ مرحومہ نے بے خوف ہوکر ریاستی خفیہ اداروں کے مظالم پر آواز بلند کرتے ہوئے اپنے عمل سے خود کو ایک سچا انسان دوست ثابت کردیا ۔

 

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close