این پی کے دفتر پر بم حملے و تمپ میں فوجی کیمپ پر حملے کی زمہ داری بی آر اے نے قبول کر لی

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن آرمی کے ترجمان سرباز بلوچ نے مختلف کاروئیوں کی زمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ بلوچ ریپبلکن آرمی کےسرمچاروں نے پنجگور کے علاقے وشبود میں نیشنل پارٹی کے رابطہ آفس پر دستی بم سے حملہ سے حملہ کیا، جس کی زمہ داری بی آر اے قبول کرتی ہے، سرباز بلوچ کا کہنا تھا کہ  نیشنل پارٹی گزشتہ کئی عرصے سے بلوچ نسل کشی میں ریاست کے جرائم میں برابر کے شریک ہیں بلوچ سرزمین پر پاکستانی قبضے کو مستحکم کرنے کیلئے نشنل پارٹی کی قیادت ریاستی منصوبوں کیلئے بطور ایندھن استعمال ہورہا ہے نشنل پارٹی کی قیادت کے گناہ ناقابل معافی ہیں اور وہ اپنے کیئے گئے گناہوں کی سزا سے خود کو بچا نہیں سکے گے۔  بی آر اے کے ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ تمپ کے علاقے اسیاآباد میں آرمی کی چوکی پر راکٹوں و خود کار ہتھیاروں سے حملہ کیا جس کے نتیجے میں چوکی کا ایک مورچہ راکٹ حملوں کے زد میں آکر مکمل تباہ ہوا اس حملے میں فورسز کے متعدد اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے، سرباز بلوچ کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز زامران کے گیشتاگان ککی کے علاقے میں فورسز نے ہمارے ساتھیوں کے راستے پر ناکہ بندی کر کے ان پر حملہ کرنے کی کوشش کی اس دوران فورسز کے ساتھ جھڑپ ہوئی اور فائرنگ کے تبادلے میں فورسز کے دو اہلکار ہلاک ہوگئےجبکہ بی آر اے کے ساتھی باحفاظت نکلنے میں کامیاب ہوگئے۔  انھونے کہا ہے کہ بی آر اے کی کاروئیاں آزاد و خودمختار بلوچ ریاست کے قیام تک جاری رہیں گے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close