پشاور: عوامی نیشنل پارٹی کے جلسے میں خودکش دھماکہ، صوبائی امیدوار ہارون بلور سمیت 12 ہلاک

نیوزڈیسک (ریپبلکن نیوز) پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں عوامی نیشنل پارٹی کے انتخابی جلسے میں خودکش دھماکے کے نتیجے میں پارٹی کے رہنما ہارون بلور سمیت 12 افراد ہلاک اور 35 افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

دھماکہ منگل کی رات گئے یکہ توت کے علاقے میں ہوا جہاں پر عوامی نیشنل پارٹی کی انتخابی مہم کے حوالے سے جلسہ چل رہا رہا تھا۔

ایڈیشنل آئی جی بم ڈسپوزل سکواڈ شفقت ملک نے بی بی سی کو تصدیق کی ہے کہ عوامی نیشنل پارٹی کے جلسے کو خودکش حملے میں نشانہ بنایا گیا۔ انھوں نے کہا کہ خودکش حملہ آور کی جیکٹ میں ایک کلوگرام تک دھماکہ خیز مواد تھا۔

پشاور کے لیڈی ریڈنگ ہسپتال کے میڈیا مینجر محمد عاصم نے نامہ نگار عزیز اللہ کو بتایا کہ دھماکے میں ہارون بلور سمیت 12افراد ہلاک اور 35 زخمی ہو گئے ہیں۔

دھماکے کے نتیجے میں صوبائی حلقہ پی کے 78 سے عوامی نیشنل پارٹی کے امیدوار ہارون بلور سمیت متعدد افراد زخمی ہو گئے جنھیں ہسپتال منتقل کیا گیا۔

ہسپتال میں جب ہارون بلور کو لایا گیا تو ان کی حالت تشویشناک تھی۔ نامہ نگار رفت اللہ اورکزئی کے مطابق کچھ دیر بعد ہارون بلور کے خاندان اور پارٹی ذرائع نے ان کی ہلاکت کی تصدیق کر دی۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ جلسے کے دوران جیسے ہی ہارون بلور کو تقریر کے لیے سٹیج پر بلایا گیا تو ساتھ ہی دھماکہ ہو گیا۔

خیال رہے کہ ہارون بلور عوامی نیشنل پارٹی کے سینیئر رہنما بشیر بلور کے بیٹے ہیں جو ستمبر 2012 میں پشاور میں ہی پارٹی کے ایک جلسے پر ہونے والے خودکش حملے میں ہلاک ہو گئے تھے۔؎

2013 کے انتخابات کی مہم کے دوران عوامی نیشنل پارٹی کے کارکنوں اور امیدواروں کو شدت پسندی کے واقعات میں نشانہ بنایا گیا تھا۔

نگران وزیراعظم سمیت مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے ہارون بلور کی ہلاکت پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

خبر کی اصل کابی رائٹ: بی بی سی اردو سروس

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close