پنجاب میں درندوں نے آٹھ سالہ معصوم بچی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کردیا

نیوزڈیسک/رپورٹ (ریپبلکن نیوز) پنجاب کے ضلع قصور میں جنسی درندوں نے ایک آٹھ سالہ معصوم بچی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر کے نعش کو کچرے میں پھینک دیا۔

پنجاب میں بچی جنسی زیادتی کا شکارآٹھ سالہ معصوم بچی زینب سپارہ پڑھنے مدرسے کے لیے گھر سے نکلی تھی جسے راستے میں ہی چند درندہ صفت لوگوں نے اغواء کر لیا تھا۔ جسے بعد میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کردیا گیا۔

بچی کی گمشدگی نے ماں باپ کو پریشان اور زہنی کوفت میں مبتلا کردیا تھا۔ بچی کے والدین نے قریبی پولیس تھانے میں بیٹی کی گمشدگی کی رپورٹ درج کرائی جس کے بعد پولیس نے علاقے میں بچی کی تلاش شروع کر دیں۔

زینب کی لاش پولیس کو ایک کچرے کی ڈیر سے برآمد ہوئی جسے پوسٹ مارٹم کے لیے ہسپتال منتقل کیا گیا تو پتہ چلا کہ بچی کو شدید جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ زینب کی جنسی زیادتی کے بعد قتل کی ہر زاویے سے تحقیق کر رہی ہے اور اب تک پانچ ہزار لوگوں سے تفتیش بھی کیا گیا ہے جبکہ 67 افراد کے میڈیکل چیک اپ بھی کیے گئے ہیں۔

یاد رہے کہ پنجاب میں کم عمر بچیوں کو جنسی زیادتیوں کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کرنے کے واقعات کثرت سے پیش آتے ہیں۔ ایک ماہ قبل ایک ایسا ہی واقعہ پنجاب کے ضلع اوکاڑہ میں پیش آیا تھا جہاں درندہ صفت لوگوں نے ایک چھ سال کی بچی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کر کے لاش کو قریبوں کمند کی فصل میں پھینک دیا تھا۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker