بی ایل ایف نےناگ میں چین سے گوادر جانے والے کافلے پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی

کوئٹہ(ریپبلکن نیوز)بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے کہا کہ بدھ کے روز سرمچاروں نے بسیمہ کے علاقے ناگ میں چین سے گوادر جانے والی قافلے پرراکٹ اور خود کار ہتھیاروں سے حملہ کیا۔ حملہ میں ایک ٹرالر پر راکٹ لگنے سے ٹرالر کا اگلا حصہ اور انجن ناکارہ ہوگیا ۔ اس قافلے کو بھاری زمینی فوج اور فضائی نگرانی میں مختلف علاقوں سے گزارا جا رہا ہے۔ جو سرمچاروں سے خوف، بلوچ قوم کی طرف سے مسترد منصوبے اور قابض ریاست کی آزادی پسندوں کو کمزور کرنے کی جھوٹی دعوؤں کا واضح ثبوت ہے۔ سی پیک منصوبہ و گوادر و بلوچستان میں ترقی کے نام پر ڈیموگرافک تبدیلی پاکستان کا ایجنڈا ہے، جہاں لاکھوں غیر بلوچوں کو آباد کرکے بلوچوں کو اپنے ہی سرزمین پر اقلیت میں تبدیل کرنے اور وسائل کی لوٹ مار کی پالیسی سر فہرست ہے۔ پاکستان نے بلوچستان پر قبضہ کے بعد سے بلوچ نسل کشی شروع کی ہے۔ پاکستان کو بلوچ نہیں بلکہ بلوچستان کی ضرورت ہے۔ مگر بلوچستان کے جانباز سرمچار اُس کی یہ خواب پورا نہیں ہونے دینگے۔ گہرام بلوچ نے کہا کہ گوادر کے مقامی لوگوں کو پینے کا پانی میسر نہیں۔ دوسری طرف ساحلی علاقوں کے مکینوں کے واحد ذریعہ معاش ماہی گیری پر بھی پابندی لگا کر لوگوں کو نان شبینہ کا محتاج بنایا جا رہا ہے۔ گوادر کو ایک فوجی چھاؤنی میں تبدیل کرکے بلوچوں کیلئے نوگو ایریا بنا دیا گیا ہے۔ بی ایل ایف بلوچ قوم کے خلاف ہونی والی ان سازشوں کا بھرپور مقابلہ کرکے دشمن کے سامنے بلوچستان کی آزادی تک کھڑا رہے گا۔ پاکستان سمیت کوئی بھی ملک بلوچستان میں بلوچ قوم کی مرضی کے بغیر سرمایہ کاری کرکے اپنی جان و مال کا ذمہ دار خود ہوگا۔ اور یہ حملے بلوچستان کی آزادی تک جاری رہیں گے۔ بدھ ہی کے روز شام کو آواران میں پیراندر کے علاقے مراد شہر میں پاکستان آرمی کی آٹھ موٹرسائیکل سوار وں پر حملہ کرکے دو اہلکار ہلاک اور دو زخمی کئے۔ یہ آٹھ موٹر سائیکل دو دنوں سے جھاؤ کا راستہ بند کرکے پہرہ دے رہے تھے، آج واپس اپنے کیمپ پیراندر آرہے تھے سرمچاروں نے حملہ کرکے دو اہلکاروں کو ہلاک اور دو زخمی کیا۔ –

مزید خبریں اسی بارے میں

Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker