بلوچستان لبریشن فرنٹ نے مختلف واقعات کی ذمہ داری قبول کر لی

BLF 4کوئٹہ(ریپبلکن نیوز)بلوچستان لبریشن فرنٹ نے مختلف واقعات کی ذمہ داری قبول کر لی ۔بلوچستان لبریشن فرنٹ کے ترجمان گہرام بلوچ نے واقعات کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ بلوچ سرمچاروں نے گزشتہ روز آواران میں پیراندر فورسز کی چیک پوسٹ پر راکٹ حملہ کرکے فورسز کو جانی و مالی نقصان پہنچایا جمعرات کے روز بسیمہ کے علاقے راغے میں فائرنگ کرکے ریاست کی سر پرستی میں مذہبی دہشت گرد تنظیم مسلح دفاع کے کارکنوں ثناء اللہ ولد رستم اور اس کے بیٹے پر حملہ کیا حملے میں ثناء اللہ شدید زخمی اور اس کا بیٹا ہلاک ہو گیا اس علاقے میں وہ خدا رحم کی سربراہی میں کام کر رہے تھے ترجمان نے کہا کہ کل رات مشکے کے علاقے جبری میں فائرنگ کرکے نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماء علی حیدر کی سربراہی میں چلنے والے ڈیتھ اسکواڈ کے اہم کارندے بٹے خان ولد قادربخش کو فائرنگ کرکے ہلاک کیا وہ کئی بلوچ دشمن سرگرمیوں میں ملوث تھا ہم ایک دفعہ پھر ایسے لوگوں کو تنبیہ کرتے ہیں کہ وہ بلوچ نسل کشی میں ریاست کا ساتھ نہ دیں ریاست اپنے مختلف حربوں کے ذریعے بلوچوں کو آپس میں لڑانے اور بلوچ کو بلوچ سے مارنے کی کوششوں میں مصروف ہے تاہم دوسری جانب فورسز پر حملے کے حوالے سے سرکاری سطح پر کوئی تصدیق نہیں کی گئی ۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close