اقوامِ متحدہ کے 37ویں سیشن کے دوران بلوچ ریپبلکن پارٹی کی مہم آج تیسرے روز بھی جاری رہی

جنیوا(ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن پارٹی کی جانب سے اقوامِ متحدہ کے 37ویں سیشن کے دوران آگاہی مہم آج تیسرے روز بھی مختلف سرگرمیوں کے ساتھ جاری رہیں۔

جنیوا میں موجود  ریپبلکن نیوز کے نمائندے کا کہنا ہے کہ آج بلوچ ریپبلکن پارٹی کا آگاہی مہم تیسرے روز بھی جاری رہا جس میں مختلف سرگرمیوں کے ساتھ بلوچستان کے گھمبیر صورتِ حال کو اجاگر کرنے کی کوشش کی گئی۔

اقوامِ متحدہ کےدفتر کے سامنے بی آر پی کے آگاہی کیمپ میں موجود کارکنان آج تیسرے روز بھی اقوام متحدہ میں آنے والے لوگوں کو بلوچستان میں ریاستی دہشتگردی، بلوچوں کی نسل کشی، جبری گمشدگیوں اور ماورائے عدالت ہلاکتوں کے بارے میں آگاہی دیتے رہے۔

اسی بارے میں:

عالمی ادارے پاکستان کو انصاف کے کٹہرے میں لاتے ہوئے بلوچوں کے قتلِ عام کا نوٹس لیں: عبدالنواز بگٹی

بی آر پی کی جانب سے اقوامِ متحدہ کے 37ویں سیشن کے دوران سرگرمیاں دوسرے روز بھی جاری رہیں

بلوچ ریپبلکن پارٹی نے اقوامِ متحدہ کی 37ویں سیشن کے دوران اپنی سرگرمیوں کا آغاز کردیا

بلوچ ریپبلکن پارٹی کے مر کزی ترجمان شیر محمد بگٹی نے ریپبلکن نیوزکے نمائندے کیساتھ بات چیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ انکی پارٹی کی جانب سے آج سرگرمیاں تیسرے روز بھی جاری رہیں۔ اور وہ مختلف ممالک سے آئے ہوئے لوگوں کو بلوچستان کے حالات کے بارے مٰیں آگاہ کر رہے ہیں۔

شیر محمد بگٹی نے کہا ہے کہ پاکستان دہشتگردوں کی فیکٹری ہے جہاں سے دہشتگرد پرورش کرتے ہیں اور پوری دنیا کے امن کو تباہ کرتے ہیں۔ جبکہ بلوچ بھی اس دہشتگردی کے شکار ہیں۔ اور ریاست پاکستان کی جانب سے بلوچوں کو اغوا کیا جاتا ہے اور انکی مسخ شدہ لاشیں ویرانوں میں پھینک دیں جاتی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close