ڈیرہ بگٹی سمیت بلوچستان بھر میں پاکستانی فورسز کی بربریت جاری ہے۔شیر محمد بگٹی

کوہٹہ (ریپبلکن نیوز) بلوچ ریپبلکن پارٹی کے ترجمان شیر محمد بگٹی نے میڈیا کو جاری بیان میں کہا ہے کہ ڈیرہ بگٹی سمیت بلوچستان بھر میں پاکستانی فورسز کی بربریت بدستور جاری ہے ڈیرہ بگٹی کی تحصیل سوئی میں رئیس توخ کے علاقے میں پاکستانی افواج نے ایک آپریشن کے دوران تین افراد کو شہید جبکہ خواتین سمیت دس افراد کو حراست میں لینے کے بعد نامعلوم مقام پر منعتقل کردیا دوران آپریشن پاکستانی فوج نے ایک شخص کو گاڈی کے نیچے کچل کر قتل کردیا جبکہ دیگر دو کو پکڑنے کے بعد فائرنگ کر کے شہید کردیا لاپتہ ہونے والے افراد میں سے دو کی شناخت محمد صلح ولد گھتران بگٹی حاجی ولد کھتران بگٹی کے ناموں سے ہوئی ہے ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ ڈیرہ بگٹی بھر میں پچھلے ایک ہفتے کے داران شہید افراد کی تعداد 13 ہوگئی ہیں جبکہ 50 افراد کو پاکستانی فوجی اہلکاروں نے لاپتہ کردیا جن میں بیشتر خواتین ہیں ادھر تمپ کے علاقے آسیا باد اور نظر آباد میں پاکستانی افواج نے گھر گھر تلاشی کے داران پانچ افراد کو اغوا کرنے کے بعد لاپتہ کردیا ہے جن کے نام شئے مرید، صدام، نوید ظفر اور دودا بلوچ بتائے گئے ہیں جبکہ کولوا کے مختلف علاقوں میں بھی پاکستانی فوج اور ان کے تشکیل کردہ ڈیتھ سکواڈ کئی دنوں سے آپریشن میں مصرف ہیں جہاں تمام علاقوں کے داخلی اور خارجی راستوں کو بند کیا ہوا ہے ترجمان نے انسانی حقوق کے اداروں سے اپیل کی ہے کہ بلوچستان میں پاکستانی فوج کے ہاتھوں بلوچ قوم کی نسل کشی کے منصوبے کو روکنے کیلئے عملی اقدامات اٹھائیں۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close