سندھ میں آباد سندھی، بلوچ، پشتون، پنجابی،سرائیکی سمیت تمام قومیں سندھی سماج کا جز ہیں۔ شفیع برفت

برلن (ریپبلکن نیوز) جئے سندھ متحدہ محاز کے چیئرمین شفیع برفت نے ریپبلکن نیوز کو جاری کردہ اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ جئے سندھ متحدہ محاز پاکستانی ریاست، اس کی پارلیمنٹ، آئین اور قانون کو نہیں مانتی۔ باوجود اس کے کہ جس طرح سندھ کا نگراں وزیرعلیٰ ایک اردو بولنے والے سندھی فضل الرحمن کو مقرر کیا گیا ہے، جو عمل سندھ کے قومی تاریخی مفادات کے حوالے سے انتہائی اہم اور بہتر عمل ثابت ہوگا۔

، پیپلز پارٹی اگر الیکشن کے بعد بھی کسی اردو بولنے والے باشعور سندھی کو سندھ کا وزیر علیٰ بناتی ہے، تو اس سے سندھ کی قومی وحدت اور قومی تکمیل نو کے تاریخی پراسس کو فائدہ ہوگا اور سندھ کی تاریخی قومی تکمیل نو کا عمل اپنی فطری ارتقا میں آگے بڑھے گا۔

ہم سمجھتے ہیں کے اردو بولنے والے سندھیوں اور سندھی بولنے والے سندھیوں کو مشترکہ کوششوں سے جدید سندھی سماج اور قومی تکمیل نو کا بنیاد مضبوط کرنا ہوگا، جس کے لیے سندھ کے باشعور اور پڑھے لکھے نوجوانوں، دانشوروں ( سندھی اور اردو ) بولنے والے سندھیوں کو سندھ سے فرسودہ جاگیرداری اور سندھ دشمن نسل پرستی کو ہمیشہ کے لیئے ختم کرکے جدید سندھی سماج کی قومی تکمیل کے لیئے مشترکہ کوششیں کرنی ہوں گی۔

اور سندھ کی قومی وحدت کو اپنا مادرِ وطن اور ماں دھرتی کی حثیت میں احترام کرنا ہوگا، ہمارا یہ اصولی موقف ہے کہ سندھی سماج ، قوم اور وطن سندھ میں رہنے والے سارے لسانی، نسلی ، مذہبی مسلک برادریوں اور کسی بھی رنگ نسل سے تعلق رکھنے والے لوگوں کا مشترکہ وطن اور ماں دھرتی ہے، جو خود کو سندھ اور سندھی قومی سماج کا حصہ اور جز سمجھتے ہیں۔

سندھ میں رہنے والے جن کا کوئی بھی تاریخی، لسانی، نسلی، پس منظر کیوں نہ ہو، سندھی، اردو ، بلوچی ، پنجابی ، سرائیکی ، پشتو، لاسی، کچھی، میمنی، دھاٹکی، براہوی زبانیں بولنے کے باوجود  ہم سب سندھ، سندھی سماج، وطن اور قوم کا جز ہیں۔ ہاں ہم سب سندھی قوم ہیں، سیاسی، معاشی مفادات، تاریخ اور سندھ کی مٹی نے ہمیں سندھی بنایا ہے۔

متعلقہ عنوانات

مزید خبریں اسی بارے میں

Close