ذاتی مفادات کی خاطر مذہبی ریاستوں کی تائید بلوچ قومی تحریک کے لئے نقصان دہ ہوگا، بی این ایم

کوئٹہ (ریپبلکن نیوز)بلوچ نیشنل موومنٹ کے مرکزی ترجمان نے ایک پالیسی بیان میں کہا ہے کہ عارضی یا ذاتی مفادات کی خاطر انتہا پسند مذہبی ریاستوں کی تائید بلوچ قومی تحریک کے لئے نقصان دہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ بی این ایم ایسے آزاد بلوچستان کے لیے جدوجہد نہیں کر رہی جہاں پر وہابی مْلاؤں کی حکومت ہو، بلکہ آزاد بلوچستان کا خواب سیکولر اور لبرل اقدار کے بغیر نا مکمل ہے۔
انہوں نے کہا کہ یہ کوئی ڈھکی چھپی بات نہیں ہے کہ بلوچستان میں پاکستانی فوج کے زیر سایہ مذہبی انتہاپسند ڈیتھ اسکواڈ تنظیموں کو فنڈنگ کہاں سے آرہی ہے۔ جس ملک کے وسائل بلوچ قومی تحریک کے خلاف استعمال ہورہے ہوں اس ملک کو اعتدال پسند کہنا یا اس کی تائید کرنا سمجھ سے بالاتر ہے۔ بی این ایم کے مرکزی ترجمان نے اس بات پر زور دیا کہ کسی بھی بیرونی ریاست کی فنڈنگ کے لالچ میں بلوچ قومی جماعتوں کو اپنے سیاسی اصول و اقدار میں تبدیلی نہیں لانی چائیے۔ ایسی سیاست سے کبھی بھی ایک خوشحال آزاد بلوچستان کا قیام عمل میں نہیں آ سکتا۔ انہوں نے کہا کہ صرف آزادی کا نعرہ لگانا کافی نہیں بلکہ بلوچ سیاسی قوتوں کو اپنے سیاسی، معاشی اور مذہبی اقدار و اصولوں کے ضمن میں واضح اور ایماندارانہ پالیسی اختیار کرنے کی ضرورت ہے، جنہیں کسی بھی قسم کے رعایات کی خاطر یا بیرونی دباؤ میں آکر بدلا نہ جائے۔

مزید خبریں اسی بارے میں

Close